امریکہ کیجانب سے چین کا "جاسوسی غبارہ” گرا نے پر چین کا ناراضگی کا اظہار

0
47

واشنگٹن: امریکہ نے چین کا "جاسوسی غبارہ” سمندری حدود میں گرا دیا جس پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ نےبین الاقوامی طریقہ کار کی خلاف ورزی کی ہے۔

باغی ٹی وی: غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق امریکہ نے کیرولائنا کے ساحل کے قریب نظر آنے والے مشتبہ چینی جاسوس غبارے کو مار گرایا۔ یہ کارروائی اس غبارے کے شمالی امریکہ میں واقع حساس فوجی مقامات کو عبور کرنے کے بعد عمل میں لائی گئی۔

امریکا میں چین کے غبارے کی موجودگی ،امریکی وزیر خارجہ کا دورہ چین منسوخ

بحر اوقیانوس میں گرنے والے غبارے کے ملبے کو نکالنے کے لیے آپریشن شروع کر دیا گیا۔ مذکورہ غبارہ تقریباً 60 ہزار فٹ کی بلندی پر اڑ رہا تھا اور اس کا سائز 3 بسوں کے برابر تھا۔

دوسری جانب چین کی وزارت خارجہ نے امریکہ کی جانب سے مبینہ جاسوس غبارہ مار گرانے کے بعد ایک جاری بیان میں کہا ہے کہ امریکہ کی جانب سے بغیر پائلٹ سویلین ہوائی جہاز کے خلاف طاقت کا استعمال کرنے پر چین نے شدید احتجاج کرتا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ چین ضروری ردعمل کا حق رکھتا ہے۔ امریکہ سے درخواست کی تھی کہ اس تمام معاملے سے تحمل اور پیشہ وارانہ انداز میں نمٹے۔ تاہم امریکہ نے طاقت کے استعمال پر اصرار کیا اور شدید ردعمل دیتے ہوئے بین الاقوامی طریقہ کار کی خلاف ورزی کی۔

پیر کی صبح اس غبارے کو کیرولا کی حدود میں دیکھا گیا تھا جہاں سے یہ بحر اوقیانوس پہنچا جبکہ امریکی صدر کو بریف کیا گیا تھا کہ اسے زمینی حدود میں گرانے کا ارادہ ہے تاہم پینٹاگون نے اس رائے کو مسترد کر دیا تھا کہ اس اقدام سے آبادی کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔

روس اور یوکرین کے درمیان جنگی قیدیوں کاتبادلہ

غبارے کے سامنے آنے کے بعد امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن نے اپنا بیجنگ کا دورہ منسوخ کر دیا تھا اس دورے کا مقصد امریکہ اور چین کے درمیان کشیدگی کو کم کرنا تھا تاہم بعد ازاں چینی وزارت خارجہ نے کہا کہ چین اور امریکہ نے کسی بھی دورے کا اعلان نہیں کیا تھا اور امریکہ کی جانب سے یہ اعلان یکطرفہ ہے۔

چین کا غبارے کے بارے میں مؤقف تھا کہ یہ غبارہ جاسوسی کے لیے استعمال نہیں کیا جا رہا ہے بلکہ یہ محدود صلاحیت کا حامل ہے جو موسم پر تحقیق کرنے والا ایک ایئر شپ ہے تاہم پینٹاگون نے چینی وضاحت کو مسترد کر دیا۔

Leave a reply