حکومت پاکستان کا پنجاب کو گندم امپورٹ کرنے کی اجازت دینے سے انکار

0
53

لاہور:وفاق کا پنجاب کو گندم امپورٹ کرنے کی اجازت دینے سے انکار،اطلاعات ہیں کہ وفاقی حکومت نے اہل پنجاب کی غذائی ضرورت کے حوالے پنجاب حکومت کی درخواست کو مسترد کردیا ہے ،

اس حوالے سے معلوم ہوا ہے کہ وزیراعلی چودھری پرویزالٰہی نے وفاق کی طرف سے پنجاب کو گندم امپورٹ کرنے کی اجازت نہ دینے پر اظہار تشویش کیا ہے، وفاق کی طرف سے اہل پنجاب کی غذائی ضروریات کے حوالے سے چوہدری پرویز الٰہی کا کہنا تھا کہ پنجاب نے خود ادائیگی کرکے 10 لاکھ میٹرک ٹن گندم امپورٹ کرنے کی اجازت طلب کی تھی۔

ان کا کہنا تھا کہ سندھ او ردیگرصوبوں کو وفاق کی طرف سے امپورٹ کردہ گندم فراہم کی جاچکی ہے۔چودھری پرویزالٰہی کا مزید کہنا تھا کہ وفاق پہلے بھی گندم امپورٹ کرچکا ہے لیکن پنجاب کو شیئر نہیں دیا۔شہباز شریف ن لیگ کو پنجاب سے نکالنے کا بدلہ عوام سے لینے کی سازش کررہے ہیں۔ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ پنجاب میں گندم کی قلت پیدا کرنے کی مذموم کاوش کی جارہی ہے۔

وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی کا کہنا تھا کہ پنجاب سے اسلام آباد کو بدستور16ہزار میٹرک ٹن گندم فراہم کی جا رہی ہے۔پنجاب نے عوامی ضروریات کو مد نظر رکھتے ہوئے آئینی اور قانونی طریقہ کار کے مطابق گندم امپورٹ کی اجازت طلب کی۔وفاق کا پنجاب کے عوام کے بارے میں رویہ افسوسناک ہی نہیں، قابل مذمت بھی ہے۔

چوہدری پرویز الٰہی نے کہا ہے کہ پنجاب میں مختلف وجوہات کی بنا پر رواں سال میں گندم کا سٹاک نسبتاً کم ہے۔پنجاب میں سیلاب متاثرین او ردیگر وجوہات کی بنا پر گندم کی امپورٹ ناگزیر ہوچکی ہے۔وزیراعلیٰ پنجاب چودھری پرویز الٰہی کی زیر صدارت اعلیٰ سطح کا اجلاس
اجلاس میں گندم کے موجودہ سٹاک اور دیگر امور کاجائزہ بھی لیا گیا ، اس کے ساتھ ستاھ یوریا، فاسفیٹ، گندم کے بیج اور درآمدی گندم پر سبسڈی کے بارے میں تبادلہ خیال کیا گیا

اس موقع پر وزیراعلیٰ چودھری پرویزالٰہی نےسبسڈی کے لئے قابل عمل او ربہتر طریقہ کار وضع کرنے کی ہدایت کی ، پنجاب کی عوام کے حوالےسے ان فیصلوں کی اس مجلس میں صوبائی وزیر زراعت سید حسین جہانیاں گردیزی، وزیرخوراک سردار حسنین بہادر دریشک،سابق وفاقی وزیر مونس الٰہی، چیف سیکرٹری، سیکرٹری خزانہ، سیکرٹری زراعت، سیکرٹری خوراک، ڈائریکٹر خوراک اور متعلقہ حکام بھی شریک ہوئے

Leave a reply