fbpx

غربا کے لیے یوٹیلٹی اسٹور بنایا جاۓ ،دیہاتی مہنگائی سے پھٹ پڑے

مظفرگڑھ محمود کوٹ کے اطراف میں موجود غربا کے لیے یوٹیلٹی اسٹور بنایا جاۓ ، پنجاب بھر کی طرح ضلع مظفر گڑھ میں ضلعی انتظامیہ نے حکومتی حکم کے مطابق مظفر گڑھ شہر میں رمضان بازار تو قائم کر دیا لیکن مظفر گڑھ شہر کے گردونواح کے دیہاتوں میں مہنگائی کو کنٹرول نہ کر سکی ضلعی انتظامیہ کی نظر صرف رمضان بازار تک محدود ہے وہاں پر بھی اکثر و بیشتر قیمت کوالٹی اور کرونا ایس او پیز کی خلاف ورزی ہوتی رہتی ہے محمود کوٹ روڈ پر مظفر گڑھ پھاٹک سے لے کر محمود کوٹ تک کوئی سستا بازار یا کوئی یوٹیلٹی سٹور نہیں ہے

جہاں سے اس علاقے کی عوام سستے داموں اشیا خرید سکیں سستے داموں تو دور کی بات ہے یہاں کی عوام دوگنا ریٹ پر اشیا ضروریات سبزی فروٹ اور گوشت لینے پر مجبور ہے اس روڈ پر کبھی کوئی ضلعی انتظامیہ کے افسران قیمتیں چیک کرنے کی زحمت نہیں کرتے ہیں ان علاقوں میں چینی 105 روپے گھی 290 روپے دال چنا 180 روپے کھجور 300 روپے دال مسور 280 روپے چکن 390 روپے بڑا گوشت 500 روپے ٹماٹر 80 روپے سبز مرچ 160 روپے كدو 60 روپے تربوز 50 روپے سیب 180 روپے وغیرہ فروخت ہو رہا ہے یہاں کی عوام کا وزیر اعلی پنجاب کمشنر ڈیرہ غازی خان ڈپٹی کمشنر مظفر گڑھ اسسٹنٹ کمشنر مظفر گڑھ سے نوٹس لے کر محمود کوٹ روڈ پر واقع جمال والا چوک سے لے کر محمود کوٹ تک گراں فروشوں کے خلاف کاروائی کرنے اور اشیا و خوردو نوش کی حکومتی ریٹ پر دستیابی کا مطالبہ ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.