ورلڈ ہیڈر ایڈ

ہانگ کانگ میں کتنے طالب علم احتجاج میں شریک ہوئے؟ خبر آ گئی

ہانگ کانگ کے اسکولوں کے ایک ہزار سے زائد طلباء ریلی میں شریک ہوئے ۔
ہانگ کانگ: ہزاروں شہریوں کا پولیس کے بدترین تشدد کیخلاف احتجاج
الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق 16سالہ پرل وونگ نے بتایا کہ میں آج کے لئے ہوم ورک چھوڑ سکتا ہوں ، لیکن اگر میں ہانگ کانگ سے ہار گیا تو میرے لئے کیا بچا ہے؟یہی وجہ ہے کہ میرے لئے جمہوریت کی حمایت میں آواز اٹھانا ضروری ہے۔

اسٹیج پر ، چینی زبان میں ایک سیاہ بینر آویزاں تھا جس پر تحریر تھی،”مستقبل کے بغیر ، اسکول جانے کی زحمت کیوں؟“
15
سالہ تھامس سانگ کے بقول ، "ہانگ کانگ اب بھی آزاد ہے ، لیکن اگر میں اب اپنی آزادیوں کے لئے کھڑا نہیں ہوا تو مجھے اس سے کسی دن افسوس ہوسکتا ہے۔ پھر بہت دیر ہو چکی ہوگی۔ ”

گرمیوں کی چھٹیوں کے بعد پیر کے روز یونیورسٹیاں کلاسوں کا دوبارہ آغاز ہونا تھا ، لیکن طلباءجو کہ احتجاجی تحریک کے روح رواں رہے ہیں ، دو ہفتوں کے بائیکاٹ کا منصوبہ بنا رہے ہیں۔

یاد رہے کہ ہانگ کانگ میں چین کے خلاف احتجاج کا سلسلہ کئی ماہ سے مسلسل جاری ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.