ایران اور امریکا کے درمیان منجمد فنڈز کی بحالی کا معاہدہ

0
37
Iran US

ایران اور امریکا کے درمیان قیدیوں کے تبادلے سمیت منجمد فنڈز کی بحالی کا معاہدہ ہوگیا ہے جبکہ ایرانی حکام کےمطابق امریکا کے ساتھ طے پانے والے معاہدے کے تحت واشنگٹن ڈی سی بہت جلد ایرانی قیدیوں کو رہا کردے گا اور 10 ارب ڈالر کی منجمد رقم بحال کرنے کا بھی فیصلہ ہوا ہے دوسری جانب امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن نے بھی تصدیق کی ہے کہ ان کا ملک ایران پر عائد تمام پابندیوں پر عملدرآمد جاری رکھے گا اور ایران کو 5 امریکی قیدیوں کی رہائی کے معاہدے کے تحت پابندیوں سے کوئی ریلیف نہیں ملے گا۔

وزارت خارجہ ایران نے جنوبی کوریا میں منجمد ایرانی فنڈز کی بحالی کا عمل شروع کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ اسلامی جمہوریہ ایران کی نیوز ایجنسی نے وزارت خارجہ کے ایک بیان کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ امریکا کے زیر حراست متعدد ایرانی قیدیوں کو جلد رہا کردیا جائے گا جبکہ وزارت خارجہ ایران کے مطابق فنڈز کی بحالی کے بعد منجمد فنڈز کے استعمال کے ذریعے تہران کے اختیار میں ہوں گے اور مجاز حکام ان کو خرچ کرنے کے عمل کو سنبھالیں گے کیونکہ وہ ملک کی ضروریات کو پورا کرنے کیلئے موزوں سمجھتے ہیں۔
مزید یہ بھی پڑھیں؛
پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں نمایاں تیزی
صادق سنجرانی سب سے آگے،بڑا گھر بھی مان گیا، سلیم صافی کا دعویٰ
سابق آئی جی کے پی کے بھائی کو اغوا کے بعد کیا گیا قتل

جبکہ دونوں ممالک کے درمیان قیدیوں کے تبادلے اور جنوبی کوریا اور عراق میں 10 ارب ڈالر کے منجمد ایرانی فنڈز جاری کرنے کا معاہدہ بھی ہوا جس میں عراق کے تجارتی بینک میں رکھے گئے فنڈز بھی شامل ہیں۔ ارنا نیوز ایجنسی کو انٹرویومیں بتایا گیا ہے کہ جنوبی کوریا میں 6 ارب ڈالر کے منجمد فنڈز کو سوئٹزرلینڈ کے ایک بینک اور پھر قطر میں ایک ایرانی بینک اکاؤنٹ میں منتقل کیا جائے گا تاکہ قیدیوں کی رہائی کے معاہدے کے تحت تہران ان تک رسائی حاصل کرسکے۔

Leave a reply