fbpx

اسلامیہ کالج پشاور کے طالب علم کی مبینہ خودکشی، سرگودھا میں 12 سالہ بچے کی پھندا لگی لاش برآمد

پشاور: اسلامیہ کالج یونیورسٹی پشاورکے طالب علم نے مبینہ خودکشی کر لی-

باغی ٹی وی : پولیس کے مطابق تہکال کی حدود میں قائم نجی ہاسٹل میں اسلامیہ کالج یونیورسٹی پشاور کے شعبہ ریاضی کے طالب علم شاہد احمد کی لاش پنکھے سے لٹکی ہوئی ملی۔

طالبہ نے یونیورسٹی کی تیسری منزل سے چھلانگ لگا لی

پولیس کے مطابق طالب علم کا تعلق چترال سے تھا اور فوری طور پر اس کی موت کی وجوہات سامنے نہیں آسکی ہیں جب کہ پوسٹ مارٹم کے بعد متوفی کی لاش اس کے آبائی علاقے منتقل کردی گئی ہے واقعے کی تحقیقات شروع کردی گئی ہیں۔

دوسری جانب سرگودھا کے علاقے جوہر کالونی میں ایک مکان سے 12 سالہ لڑکے کی پھندہ لگی لاش برآمد ہوئی ہے پولیس کے مطابق 12 سالہ محمد رحمان کی چارپائی سے لٹکی اور گلے میں پھندا لگی لاش ملی۔

پولیس کے مطابق اہل خانہ نے بیان دیا کہ ان کی کسی سےدشمنی نہیں، بچے کو گھر میں اکیلا چھوڑ کر شاپنگ کے لیے گئے تھے، رات کو گھر واپس آئے تو بچےکی موت کا معلوم ہوالاش کو ڈی ایچ کیو ٹیچنگ اسپتال منتقل کردیا گیا ہے اور پوسٹ مارٹم کے بعد ہی موت کی وجہ سامنے آسکے گی۔

قبل ازیں لاہور کی ویمن یونیورسٹی کی طالبہ نے مبینہ طور پر خودکشی کی کوشش کی ہے اور یونیورسٹی کی عمارت کی تیسری منزل سے چھلانگ لگائی ہےجس کےباعث طالبہ شدید زخمی ہو گئی تھی،طالبہ کو طبی امداد کےلئےسروسزہسپتال منتقل کردیا گیا تھا،طالبہ یونیورسٹی کیوں گئی اس پر بھی تحقیقات جاری ہیں-

یونیورسٹی انتظامیہ نے واقعہ کی تفصیلات سےآگاہ کرتےہوئےکہا تھاکہ لڑکی بی ایس فزکس کی طالبہ ہے اوراس نے شعبہ سوشل سائنسزکی تیسری منزل سے چھلانگ لگائی ہےطالبہ کی چھلانگ لگانے کی وجہ پتا نہیں چل سکی تا ہم واقعے میں طالبہ کی ٹانگیں فریکچرہوئیں واقعہ کی انکوائری کےلیے 4 رکنی کمیٹی تشکیل دی گئی ہے طالبہ کی عمر 22 برس ہے اور اسکا تعلق لاہور سے ہی ہے، یونیورسٹی میں چھٹیاں ہیں-

لاہور میں اسلحے کی نمائش کرنے پر 4 ملزمان گرفتار