اسلام آباد میں اکھنڈ بھارت کے بینرز کس نے لگائے؟ حقیقت پتہ چلی تو سب حیران رہ گئے؟ بڑی خبر

اسلام آباد میں اکھنڈ بھارت اور مہا بھارت کے لگائے جانے والے بینرز اور پوسٹرز لگائے جانے کے بعد سے سوشل میڈیا پر ہنگامہ جاری تھا جسے بعد میں اتار بھی دیا گیا تاہم اب ان بینرز کی اصل حقیقت کھل کر سامنے آ گئی ہے،

باغی ٹی وی کی رپورٹ‌ کے مطابق وفاقی دارالحکومت میں‌ لگائے جانے والے ان بینرز کا شور اس وقت اٹھا جب ایک شہری نے سوشل میڈیا پر ویڈیو پیغام ڈالا اور کہا کہ ہم بنگلہ دیش تو گنوا چکے نئے پاکستان میں اب ہمیں اور کیا قیمت ادا کرنا پڑے گی، آخر اسلام آباد میں یہ بینرز اور ہورڈنگ لگ کیسے گئے؟

سوشل میڈیا پر ڈالے گئے اس ویڈیو پیغام کے بعد ہر کسی نے اندھا دھند تصاویر شیئر کرنا شروع کر دیں اور بعض‌ سیاسی شخصیات نے بھی سوشل میڈیا پر ٹویٹس کرتے ہوئے حصہ ڈالا اور ان بینرز کے لگانے کی تحقیقات کا مطالبہ کیا جن میں دفعہ 370 سے متعلق تحریر لکھی گئی اور شیو سینا کے لیڈر سنجے راوت کے الفاظ نقل کئے گئے جن میں ان کی تقریر کا حوالہ دیا گیا جس میں مذکورہ انتہاپسند لیڈر نے کہاکہ آج جموں و کشمیر لیا ہے، کل بلوچستان، آزاد کشمیر لیں گے،

سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے اس بات پر تو زبردست ہنگامہ آرائی کی گئی تاہم کسی نے اس جانب توجہ نہیں دی کہ ان پر لکھا کیا گیا ہے؟ جبکہ حقیقت یہ ہے کہ اکھنڈ بھارت کے یہ بینرز اس ہندوانتہاپسندانہ نظریہ کے حق میں نہیں‌ بلکہ مخالفت میں لگائے گئے اور اس بینرز کے اوپر واضح طور پر لکھا گیا تھا کہ اکھنڈ بھارت اصل خطرہ ہے، یعنی ان بینرز کے ذریعہ ہندوانتہاپسندوں کے اصل نظریات کو واضح‌ کرنے کی کوشش کی گئی کہ درحقیقت یہ نظریات اصل خطرہ ہیں،

سوشل میڈیا پر بعض صارفین نے ان بینرز کی اصل حقیقت واضح‌ کرتے ہوئے لکھا کہ یہ تو دراصل آگاہی بینرز تھے لیکن سوشل میڈیا پر اس حوالہ سے مخالفانہ مہم بنا دی گئی، واضح‌ رہے کہ سوشل میڈیا پر ان بینرز کے اعتراض اٹھائے جانے کے بعد انہیں اسلام آباد انتظامیہ کی جانب سے اتار دیا گیا ہے اور اب وفاقی دارالحکومت میں ایسا کوئی بینر دکھائی نہیں‌ دے رہا.

1 تبصرہ
  1. محمد جاوید کیانی کہتے ہیں

    اب پاکستان کو پیچھے نہیں ہٹنا چاھیے اب وقت آگیا ہے انڈیا کو سبق سیکھانے کا ایسا سبق کے انڈ یا کی داستان نہ رہے داستانوں میں قدم بڑھاٶ پاک فوج پورا پاکستان آپ کے ساتھ ہے ۔دل دل پاکستان جان جان کشمیر

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.