fbpx

خالصتان ریفرنڈم: کینیڈا میں تاریخ رقم،آزاد خالصتان کا کیپیٹل شملہ ہونا چاہیے،سکھوں کا مطالبہ

بھارتی پنجاب جلد ایک آزاد ملک کے طور پر دنیا کے نقشے پر ابھرے گا

ٹورنٹو:کینیڈا میں خالصتان ریفرنڈم کے حوالے سے تاریخ رقم ، خالصتان ریفرنڈم میں ایک لاکھ 10 ہزار سکھوں نے ووٹ کاسٹ کیے۔

باغی ٹی وی : ریفرنڈم میں غیرمعمولی تعداد میں سکھوں کی شرکت پر سکھ فارجسٹس نے اظہار تشکرکیا ہے ، ووٹ ڈالنے والے سکھوں نے مطالبہ کیا ہے کہ آزاد خالصتان کا کیپیٹل شملہ ہونا چاہیے۔

بھارت کو بڑی سفارتی ناکامی کا سامنا،کینیڈا میں ریفرنڈم آج ہوگا

واضح رہے ریفرنڈم میں حصہ لینے والے شرکا کا کہنا تھا کہ ریفرنڈم کے نتائج دنیا پر واضح کردیں گے کہ سکھ آزادی چاہتے ہیں، بھارتی پنجاب جلد ایک آزاد ملک کے طور پر دنیا کے نقشے پر ابھرے گا، بھارت طاقت کے ذریعے سکھوں کو آزادی کے حق سے محروم نہیں کرسکتا۔

ووٹنگ کا آغاز خصوصی دعاؤں سے ہوا۔ ریفرنڈم میں ووٹ ڈالنے کے لیے خواتین اور بزرگوں کی بڑی تعداد قطار میں کھڑی تھی رائے دہندگان نے کہا تھا کہ ریفرنڈم کے نتائج سے یہ واضح ہو جائے گا کہ سکھ بھارت سے آزادی چاہتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارتی پنجاب کی ریاست میں دنیا کے نقشے پر ایک نیا ملک ظاہر ہو گا، ان کا کہنا تھا کہ بھارت سکھوں کو آزادی سے محروم نہیں کر سکتا۔

سکھوں کیلئےعلیحدہ ملک "خالصتان” کے قیام پر کینیڈا میں ریفرنڈم،مہم کی حمایت میں ہزاروں گاڑیوں کی ریلی

یاد رہے کہ بھارت کو بڑی سفاری ناکامی کا سامنا کرنا پڑا تھا جب بھارت کی خالصتان ریفرنڈم رکوانے کی ساری کوششیں بے کار گئیں اور ریفرنڈم کا آغاز ہوا کینیڈین حکومت کا کہنا تھا کہ خالصتان ریفرنڈم کو روکا نہیں جاسکتا، لوگوں کو آزادی اظہار کی اجازت ہے۔

کینیڈین حکومت کی جانب سے کہا گیا تھا کہ خالصتان ریفرنڈم سکھوں کا قانونی و جمہوری حق ہے۔ کینیڈا میں قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے ہر کوئی اپنا جمہوری حق استعمال کر سکتا ہے۔

کینیڈا میں ریفرنڈم کے باعث سیاسی کشیدگی کے بعد مشتعل افراد نے ایک مندر میں توڑپھوڑ کی تھی جس پر بھارتی حکومت نے کینیڈا سے کارروائی کا مطالبہ کیا تھا۔

امریکا اورطالبان کے درمیان دوحا معاہدے کے تحت قیدیوں کا تبادلہ