مظفرگڑھ:ملزمان نےنوجوان کی ناک کاٹ دی

0
40
مظفرگڑھ

مظفرگڑھ:نوجوان کی ناک کاٹ دی گئی ،اطلاعات کے مطابق مظفرگڑھ کے علاقے علی پور میں 5 ملزمان نے ایک نوجوان کی ناک کاٹ ڈالی۔پولیس کے مطابق متاثرہ نوجوان کا کہنا ہے کہ 5 ملزمان اسے اغوا کرکے لے گئے اور تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد اس کی ناک تیز دھار آلے کی مدد سے کاٹ دی۔

مظفر گڑھ کی تحصیل علی پور کے گاؤں خیرپور سادات میں خاتون سے ناجائز تعلقات کے شبہے میں نوجوان کو مبینہ طور پر اغوا کرنے، اسے جسمانی تشدد کا نشانہ بنانے اور پھر اس کی ناک کاٹنے میں ملوث 5 ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا۔25 سالہ آصف مگسی کے اہل خانہ نے پولیس کو بتایا کہ ملزمان نے اسے علی پور تحصیل کے گاؤں گبر آرائیں سے اغوا کیا اور شدید جسمانی تشدد کا نشانہ بنایا۔

متاثرہ شخص کی جانب سے علی پور پولیس کو دیے گئے بیان کے مطابق 5 ملزمان فلک شیر، یوسف، عبدالستار، کلیم اللہ اور عبدالعزیز نے اسے بندوق کے زور پر اغوا کیا اور گبر آرائیں کے علاقے میں لے گئے جہاں انہوں نے تشدد کیا اور پھر چاقو سے ناک کاٹ دی متاثرہ نوجوان کے اہل خانہ کا کہنا تھا کہ ملزمان نے الزام لگایا کہ آصف مگسی کے ان کی رشتہ دار خاتون سے تعلقات ہیں۔پولیس کا کہنا ہے کہ نوجوان کی ناک کاٹنے والے 2 ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا ہے، شبہ ہے ملزمان نے بہن سے دوستی کے الزام میں نوجوان پر تشدد کیا تاہم واقعے کی تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں۔

زخمی نوجوان کو علاج کے لیے ہسپتال منتقل کردیا گیا جب کہ تھانہ خیرپور سادات پولیس نے ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرکے تحقیقات کا آغاز کردیا۔

خیال رہے کہ گزشتہ برسوں کے دوران ملک میں غیرت کے نام پر قتل کے مختلف واقعات بھی رونما ہوچکے جب کہ اسلامی نظریاتی کونسل نے غیرت کے نام پر قتل کو غیر اسلامی اور ملکی قوانین کے خلاف قرار دے چکی ہے۔اس کے علاوہ سپریم کورٹ کی جانب سے یہ ریمارکس بھی سامنے آئے تھے کہ غیرت کے نام پر قتل کبھی بھی قابل احترام عمل نہیں تھا، اس طرح کے قتل کو غیرت کے نام پر قتل کا درجہ نہیں دیا جانا چاہیے۔

Leave a reply