سرکاری اسپتالوں میں حکیموں اور ہومیوپیتھک ڈاکٹروں کی نشستیں ختم کرنے کا فیصلہ

ہومیوپیتھک ڈاکٹروں اور حکیموں کی خالی نشستوں کےلیےبجٹ نہیں رکھا گیا
0
44
homeopethic

لاہور: صوبہ پنجاب کے سرکاری اسپتالوں میں حکیموں اور ہومیوپیتھک ڈاکٹروں کی نشستیں ختم کی جا رہی ہیں۔

باغی ٹی وی:ادو نیوز نے سرکاری دستاویزات کا حوالہ دیتے ہوئے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ صوبے کی نگران کابینہ کی جانب سے منظوری کے بعد اسمبلی میں پیش کیے جانے والے چار مہینوں کے غیر ترقیاتی بجٹ میں سرکاری اسپتالوں میں متبادل طریقہ علاج کے لیے مختص ہومیوپیتھک ڈاکٹروں اور حکیموں کی خالی نشستوں کےلیےبجٹ نہیں رکھا گیا ہےدستاویزات کےتحت صوبائی محکمہ صحت نےان تقرریوں کے خاتمے کی سمری بھی منظور کر لی ہے۔

صحت کارڈ پر دل کی بیماریوں اور زچگی کا علاج روک دیا گیا

سرکاری دستاویزات کےتحت صوبہ پنجاب کے پرائمری اینڈ سیکنڈری اسپتالوں میں 300 سے زائد نشستیں حکیموں اور ہومیوپیتھک ڈاکٹروں کے لیے مختص تھیں جن میں سے زیادہ ترخالی ہیں،اوران پر گزشتہ ایک دیہائی سےبھرتیاں بھی نہیں کی گئی ہیں لیکن اب ان خالی نشستوں کو ختم کرنیکا فیصلہ کیا گیا ہے جن نشستوں پر پہلے ہی سے تقرریاں ہیں اور ان پر حکیم و ہومیوپیتھک ڈاکٹرز کام کر بھی رہے ہیں ان کی ریٹائرمنٹ کے بعد وہ آسامیاں بھی مستقل طور پر ختم کر دی جائیں گی۔

سوئیڈن: قرآن کریم کی بےحرمتی کے واقعے پر یورپی یونین کا ردعمل

صوبائی وزارت صحت کے ترجمان نے اس حوالے سے کہا ہے کہ بجٹ کے درست استعمال کے لیے غیر ضروری اخراجات کے خاتمے پر کام ضرور ہو رہا ہے لیکن کسی کو بھی نوکری سے نہیں نکالا جائے گا، نہ ہی کوئی حکومت ایسا کر سکتی ہے البتہ جو نشستیں استعمال نہیں ہو رہی ہیں اور ہر برس اس کے لیے بجٹ رکھنا پڑتا ہے ان کے متعلق کچھ سفارشات ہیں جن کے حتمی نتیجے کی تصدیق بجٹ کی منظوری کے بعد ہی ہو سکے گی۔

بڑی خوشخبریاں ،عید پر بڑا کچھ ہو گیا۔ بشری بی بی کا نیا ٹوٹکہ، پرویز …

Leave a reply