fbpx

نیٹو کا جاسوسی طیارہ اور اسرائیلی مسافر بردارہوائی جہاز تصادم سے بال بال بچ گئے

ماسکو:امریکی جاسوسی طیارہ اور اسرائیلی ہوائی جہاز تصادم سے بال بال بچ گئے-

باغی ٹی وی : غیر ملکی خبررساں ادارے روئٹرز کے مطابق کہ اسرائیل سے اڑان بھرنے والا مسافر بردار طیارہ اور ایک امریکی نیٹو جاسوسی طیارہ بحیرہ اسود کے اوپر اچانک آمنے سامنے آگئے جس پر اسرائیلی ہوائی جہاز نے فضائی تصادم سے بچنے کیلئے فوراً طیارے کو زمین کی طرف غوطہ دیا۔

ٹھوس ثبوت ہیں کہ روس یوکرائن پر حملے کی تیاری کر رہا ہے:امریکی انٹیلیجنس کا دعویٰ

روس کی فیڈرل ایئر ٹرانسپورٹ ایجنسی نے بیان میں کہا کہ نیٹو کا CL600 جاسوسی طیارہ تیل ابیب سے 142 مسافرں کو ماسکو جانے والے اسرائیلی طیارے کےراستے میں اچانک آگیا تھا۔

ایروفلوٹ نامی اسرائیلی پرواز کو مبینہ طور پر جاسوس طیارے سے اپنا فاصلہ برقرار رکھنے کے لیے 500 میٹر (1,600 فٹ) زمین کی طرف تیزی سے آنا پڑا۔

ایوی ایشن اتھارٹی، Rosaviatsia نے کہا کہ سوچی کے بحیرہ اسود کے ریزورٹ سے Skopje جانے والے ایک چھوٹے CL-650 طیارے کو بھی اپنا راستہ تبدیل کرنا پڑا۔

انڈونیشیا: آتش فشاں پہاڑ پھٹنے سے ہزاروں افراد کی نقل مکانی،ہرطرف خوف وہراس

ایجنسی نے یہ نہیں بتایا کہ جاسوس طیارہ نیٹو کے کس رکن کا تھا۔ روس کی وزارت دفاع نے جمعہ کو کہا کہ اس نے بحیرہ اسود کے اوپر دو امریکی فوجی جاسوس طیاروں کی حفاظت کے لیے لڑاکا طیاروں کو گھیر لیا ہے۔

ماسکو میں امریکی سفارت خانے نے اس واقعے کے بارے میں فوری طور پر کوئی تبصرہ نہیں کیا جب اسے پہلی بار انٹرفیکس نیوز ایجنسی نے رپورٹ کیا۔
Rosaviatsia نے کہا کہ خطے میں نیٹو طیاروں کی پروازوں میں اضافہ سویلین طیاروں کے لیے خطرات پیدا کر رہا ہے اور ماسکو نے ان پر سفارتی شکایت درج کرنے کا منصوبہ بنایا ہے یوکرین اور بحیرہ اسود کے علاقے پر بین الاقوامی کشیدگی بڑھ رہی ہے۔

مودی ایک ظالم شخص ہے جس سے انصاف ،خیر اور اچھائی کی توقع نہیں کی جاسکتی: راہل…