آئل کمپنیوں کی اربوں روپے کی بد عنوانی،رحمان ملک نے رپورٹ پیش کرنے کا مطالبہ کر دیا

0
36

چیئرمین سینیٹ قائمہ کمیٹی داخلہ سینیٹر رحمان ملک آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کے اربوں روپے کی بدعنوانی پر ازخود نوٹس۔ وزارت داخلہ تفصیلی رپورٹ 07 دن کے اندر کمیٹی کے اگلے اجلاس میں بحث کے لئے پیش کرے،قائمہ کمیٹی داخلہ تیل بحران پر اپنی جامع رپورٹ سینیٹ ہاوس میں پیش کرے گی، قائمہ کمیٹی داخلہ نے جون میں پیدا ہونے والے تیل بحران پر ایف آئی اے کو تحقیقات کا حکم دیا تھا،

سینیٹر رحمان ملک نے مزید کہا کہ ایف آئی اے ٹیم کی کارکردگی قابل تعریف ہے جس سے آئل بحران کے لئے ذمہ دارعناصر کی نشاندہی ہوگی،قائمہ کمیٹی داخلہ ان اسباب اور عوامل پر غور کرے گی جواتنی بڑی سطح پر بدعنوانی کی وجہ قرار دیئے گئے ہیں،
آئل مارکیٹنگ کمپنیز ،اوگرا، کسٹم اور دیگر شامل سرکاری حکام کی ملی بھگت کو بے نقاب کرنی کی ضرورت ہے، ذمہ دار حکومتی حکام اور دیگر عناصر کیخلاف سخت قانونی کاروائی کیجائے، تیل کی ذخیرہ اندوزی اور مصنوعی قلت کیوجہ سے قومی خزانے کو 250 بیلن روپے کا دیا گیا،

پارلیمنٹ اتنے بڑے پیمانے پر قومی خزانے کو نقصان پہنچانے پر خاموش نہیں رہ سکتا، تیل کی قیمتوں میں اضافے سے غریب آدمی پر ناقابل برداشت بوجھ پڑا، قائمہ کمیٹی داخلہ ایران سے تیل / ڈیزل کی اسمگلنگ اور شامل عناصر پر بھی غور کرے گی،

ان ذمہ دار اداروں اورسرکاری حکام کی تفتیش کیجائے جنہوں نے ایران سے اتنے بھاری مقدار میں تیل درآمد کرنے کی اجازت دی تھی، عالمی منڈی میں جب تیل سستا تھا تو حکومت نے زیادہ مقدار میں کیوں نہیں خریدا،

Leave a reply