افواج پاکستان کا سیلاب زدہ علاقوں میں ریسکیو آپریشن جاری

0
40

افواج پاکستان کا سیلاب زدہ علاقوں میں امدادی و ریسکیو آپریشن جاری ہے اور افواج پاکستان کے تمام شعبے سیلاب متاثرین کی امداد اور مدد میں پیش پیش ہیں۔

خیبرپختونخوا، اسلام آباد اور راولپنڈی، سرگودھا، گوجرانوالہ، لاہور اور فیصل آباد ڈویژنوں کے تمام بڑے دریاؤں کے بالائی علاقوں میں گرج چمک کے ساتھ تیز ہواوٴں اور گرج چمک کے ساتھ درمیانی شدت کی بارش کا امکان ہے۔ جبکہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران سیلاب سے 11 افراد جان کی بازی ہار گئے۔ اور اب تک مجموعی طور پر 1325 افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں اور 12703 زخمی ہو چکے ہیں۔
آرمی ایوی ایشن کی کوششیں
اب تک 363 آرمی ایوی ایشن ہیلی کاپٹر مختلف علاقوں میں پھنسے ہوئے لوگوں کو نکالنے کے لیے روانہ کیے جا چکے ہیں۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 25 پروازیں کی گئیں اور 131 پھنسے ہوئے افراد کو نکالا گیا تھا اور 32 ٹن امدادی سامان سیلاب متاثرین تک پہنچایا گیا ہے۔ مزید برآں، اب تک 3716 پھنسے ہوئے افراد کو آرمی ایوی ایشن نے ہیلی کی مدد سے نکالا ہے۔
ریلیف کیمپس
اب تک سندھ، جنوبی پنجاب اور بلوچستان میں 147 ریلیف کیمپس اور سیلاب متاثرین کے لیے امدادی سامان جمع کرنے اور آگے تقسیم کرنے کے لیے ملک بھر میں 284 ریلیف آئٹمز کلیکشن پوائنٹس قائم کیے گئے ہیں۔
عطیات
جبکہ اب تک 4247 ٹن اشیائے خوردونوش کے ساتھ 439 ٹن غذائی اشیاء اور 2163212 ادویات کی اشیاء جمع کی جا چکی ہیں۔ تاہم 3570 ٹن خوراک، 379 ٹن غذائی اشیاء اور 1778212 ادویات تقسیم کی جا چکی ہیں۔
مزید یہ کہ پاک فوج کی جانب سے 232811 راشن پیک کے ساتھ ساتھ 1617 ٹن راشن بھی تقسیم کیا گیا۔
طبی امداد
اب تک 250 سے زائد میڈیکل کیمپ لگائے گئے ہیں جن میں ملک بھر میں 97,000 سے زائد مریضوں کا علاج کیا گیا ہے اور تین سے پانچ دن تک کی مفت ادویات بھی فراہم کی گئی ہیں۔
اہم سرگرمیاں
ڈیرہ اسماعیل خان میں سگو پل کی تعمیر جاری ہے اور آج تک مکمل ہونے کا امکان ہے۔ جبکہ خضدار میں بجلی کی سپلائی بحال کی جاچکی ہے اور دادو، سبی اور کوئٹہ ٹرانسمیشن لائن کی مرمت کا کام جاری ہے۔ کوئٹہ میں گیس کی سپلائی جزوی طور پر بحال ہوگئی ہے۔

پاک بحریہ کی ریلیف اور ریسکیو کی کوششیں

پاک بحریہ نے 41 ہیلی کاپٹروں کی پروازیں بھی کیں ہیں، 12176 اہلکاروں کو ریسکیو کیا گیا، 2687 خاندانوں کو شیلٹر فراہم کیا گیا، 1932 ٹن راشن، 2532 خیمے، 300 کلوگرام ادویات تقسیم کیں گئی اور ملک بھر میں اب تک 28250 مریضوں کا علاج بھی کیا گیا ہے۔
پاک فضائیہ کی امداد اور بچاؤ کی کوششیں
پاک فضائیہ نے فضائی پروازیں کرکے 1521 اہلکاروں کو ریسکیو کیا، 2763 خیمے، 106495 کھانے کے پیکٹ، 1161113 کلو گرام راشن، 134486 لیٹر 165 شہروں میں پانی فراہم کیا گیا۔ جبکہ لوگوں کو خوراک، خشک راشن اور طبی امداد فراہم کی گئی ہے۔

پی اے ایف ہیلی کاپٹرز سیلاب سے متاثرہ افراد کو بچانے اور ان علاقوں میں مدد فراہم کرنے میں مصروف عمل ہیں کیونکہ زمینی راستے سے اکثر علاقوں میں مکمل طور پر کٹ گئے ہیں۔ علاوہ ازیں اس وقت پی اے ایف سندھ، نواب شاہ، سکھر، میرپور خاص، تلہار، جیکب آباد، سہون، اور بلوچستان سمنگلی، قلعہ عبداللہ اور قلعہ سیف اللہ۔ پنجاب میں راجن پور اور ڈی جی خان، جی بی، گلگت اسکردو، غذر، نلتر، گانچھے۔ کے پی کے، نوشہرہ، چارسدہ، خاصگی، سیدو شریف، شانگلہ،میں اپنی امدادی و آپریشن کاروائیوں میں مصروف عمل ہے۔
سڑکوں کی مرمتی
ملک کے مختلف حصوں میں سڑکوں اور راستوں کی صورتحال ابھی بھی مسدود ہے N-95 – (بحرین – لائکوٹ – لائیکوٹ – کالام)، N-55 ڈی آئی خان کے قریب پروآ میں ہر قسم کی ٹریفک کے لیے، N-50 سگو میں ہر قسم کی ٹریفک کے لیے وانگو پہاڑیوں کے 24 کلومیٹر حصے میں لینڈ سلائیڈنگ کی وجہ سے پل اور M-8 بند ہے۔

Leave a reply