پہلے کیا آیا مرغی یا انڈہ؟ماہرین نے نئی تحقیق میں جواب جان لیا

زمانہ قدیم میں پرند وں کے ہاں بچوں کی پیدائش ممالیہ جانوروں کی طرح ہی ہوتی تھی۔
0
44
What came first, the chicken or the egg?

ماہرین نے ایک تحقیق میں انکشاف کیا ہے کہ موجودہ عہد کے رینگے والے جانور (چھپکلی، سانپ اور دیگر)، پرندے اور ممالیہ جانداروں کے آباؤ اجداد انڈے دینے کی بجائے بچے کو جنم دیتے تھے۔

باغی ٹی وی :دی گارڈین کے مطابق انڈا پہلے آیا یا مرغی؟ یہ ایک ایسا سوال ہے جس نے یونانیوں کے بعد سے فلسفیوں کو پریشان کیا ہے۔ لیکن ایسا لگتا ہے کہ اب ہمارے پاس اس آسان سوال کا جواب ہے،یہ اطمینان بخش نتیجہ ایک ماہر پینل کیجانب سے کی گئی تحقیق تھی جس میں ایک فلسفی، ماہر جینیات اور چکن فارمر شامل تھے۔

جرنل نیچر ایکولوجی اینڈ ایوولوشن میں شائع بلاگ کے مطابق سائنسدانوں نے یہ جواب ایمفیبین (خشکی اور پانی میں رہنے والے جاندار جیسے مینڈک) اور lizards پر کی جانے والی ایک تحقیق میں دریافت کیاجس میں بتایا گیا کہ موجودہ عہد کے رینگے والے جانور (چھپکلی، سانپ اور دیگر)، پرندے اور ممالیہ جانداروں کے آباؤ اجداد انڈے دینے کی بجائے بچے کو جنم دیتے تھے۔

پاکستان کےخودکار چیک کلیئرنگ سسٹم نِفٹ پر سائبر حملہ

کنگز کالج لندن میں پینل کے رکن اور سائنس کے فلسفی ڈیوڈ پاپیناؤ نے کہا، "چکن کے انڈے مرغیوں سے پہلے تھے، یہ مرغی کے انڈوں کی نوعیت پر منحصر ہے میں بحث کروں گا کہ یہ مرغی کا انڈا ہے اگر اس میں مرغی ہے۔ اگر کینگرو ایک انڈا دے جس سے شتر مرغ نکلے تو وہ یقیناً شتر مرغ کا انڈا ہوگا، کینگرو کا انڈا نہیں اس استدلال سپہلا چکن واقعی مرغی کے انڈے سے آیا تھاحالانکہ وہ انڈا مرغیوں سے نہیں آیا تھا۔

51 قدیم جانداروں اور 29 زندہ جانوروں پر تحقیق میں بتایا گیا کہ ممالیہ اور رینگے والے جانوروں کے ساتھ ساتھ پرندوں کے اجداد بھی بچوں کو اپنے بطن میں زیادہ وقت تک رکھتے تھے اب پرندے اور رینگنے والے جاندار انڈے دیتے ہیں مگر زمانہ قدیم میں ان کے ہاں بچوں کی پیدائش ممالیہ جانوروں کی طرح ہی ہوتی تھی۔

طویل عرصے تک سائنسدان سخت چھلکوں والے انڈوں کو ارتقا کی ایک بہترین مثال تصور کرتے رہے ہیں مگر اس نئی تحقیق میں خیال ظاہر کیا گیا کہ طویل عرصے تک بچوں کو بطن میں رکھنے والے جانوروں کو زیادہ تحفظ ملتا تھا۔

محققین نے بتایا کہ لگ بھگ 32 کروڑ سال پہلے ایسے جانور ابھرنا شروع ہوئے جن کی جِلد واٹر پروف تھی اور وہ موسم کے مطابق خود کو ڈھالنے لگے اور پھر ان کے بچے انڈوں کے ذریعے پیدا ہونے لگے۔

سعودی وزیر خارجہ کی تہران میں ایرانی صدر سے ملاقات

زمانہ قدیم کے فوسلز کے تجزیے سے انکشاف ہوا کہ اب انڈے دینے والے جاندار اس زمانے میں بچوں کو جنم دیتے تھے، جس سے عندیہ ملتا ہے کہ وہ بتدریج انڈے دینے لگے تھے محققین کے مطابق بتدریج ان جانداروں کے تولیدی نظام میں تبدیلی آئی تاکہ وہ اپنے بچوں کو ماحول سے تحفظ فراہم کر سکیں۔

تو اگر آپ سے پوچھا جائے کہ پہلے مرغی آئی یا انڈہ، تو اس نئی تحقیق کو مدنظر رکھتے ہوئے مرغی زیادہ بہتر انتخاب ہے۔

واضح رہے کہ بچگانہ معمہ کا سب سے قدیم ریکارڈ شدہ حوالہ یونانی مورخ میسٹریس پلوٹارکس کے مضامین اور مباحثوں کے مجموعے سے ملتا ہے، جو 46AD میں پیدا ہوا تھا۔ مرغی یا انڈا پہلے آیا کے عنوان سے ایک حصے میں انہوں نے تجویز پیش کی کہ یہ سوال پہلے سے ہی قائم ہے: "انڈے اور مرغی کے بارے میں مسئلہ، ان میں سے کون پہلے آیا، اس پہیلی کو عام بھی استعمال کیا جانے لگا-

آیا پینل نے اس بحث کو حل کیا ہے، یہ واضح نہیں ہے، لیکن وہ چکن/انڈے کے درست آرڈر پر متفق تھےجان بروک فیلڈ، نوٹنگھم یونیورسٹی کے ایک ارتقائی جینیاتی ماہر نے کہا کہ اس حل میں قیاس آرائی کے واقعہ کو ایک ساتھ جوڑنا شامل ہےجس میں مرغیوں نےپہلی بار ارتقاء کیا تھا۔

اسکول پر دہشت گردوں کا حملہ،بچوں سمیت 40 افراد ہلاک

وہ تصور کرتے ہیں کہ دو غیر مرغی کے والدین اکٹھے ہو رہے ہیں اور جینیاتی تغیر کی وجہ سے ایک نئی نسل کے پہلے فرد کو جنم دے رہے ہیں۔ پروفیسر بروک فیلڈ نے کہا کہ "پہلا مرغ اپنے والدین سے کسی جینیاتی تبدیلی کی وجہ سے مختلف ہوا ہو گا، شاید یہ ایک بہت ہی لطیف تھا، لیکن ایک ایسا پرندہ جس کی وجہ سے یہ پرندہ واقعی مرغی ہونے کے لیے ہمارے معیار پر پورا اترنے والا پہلا تھا-

انہوں نے مزید کہا کہ "اس طرح انڈے کے چھلکے کے اندر رہنے والے جاندار کا ڈی این اے وہی ہوتا جو مرغی میں ہوتا ہے، اور اس طرح وہ خود مرغی کی نسل کا ایک رکن بن جاتا ہے-

Leave a reply