ایک سال گرائونڈ رہنے کے بعد پی آئی اے کا اے تھری ٹوئنٹی اڑان کے قابل

0
26

پی آئی اے کے صدر و چیف ایگزیکٹو آفیسر ایئر مارشل ارشد ملک کی کوشش رنگ لے آئی،پاکستان انٹر نیشنل ائر لائنز کا ایک اور ائر بس اے تھری ٹوئنٹی( A320) طیارہ ایک سال سے زائد عرصہ گرائونڈ رہنے کے بعد اڑان کے قابل ہو گیا ۔

ترجمان پی آئی کے مطابق طیارہ گذشتہ سال مئی سے ناکارہ حالت میں بے توجہی کا شکار تھا۔ سی ای او ائر مارشل ارشد ملک نے گذشتہ سال نومبر میں چارج سنبھالنے کے بعد تمام گرائونڈڈ طیاروں کو قابل اڑان بنانے کے احکامات جاری کئے تھے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل ایک بوئنگ 777 طیارہ بھی ڈیڑھ سال سے زائد عرصہ گراونڈ رہنے کے بعد گزشتہ ماہ درست حالت میں کر دیا گیاتھا۔ پی آئی اے نے اس سلسلے میں حکومت سے مالی مدد کی درخواست بھی کی تھی جس پر حکومت کی جانب سے کوئی خاطر خواہ عملدرآمد نہیں کیا گیا اور مشکل حالات کے باوجود پی آئی اے نے اپنے وسائل کا موثر استعمال کیا ۔دو طیاروں کی بروقت بحالی کے بعد پی آئی اے کے حج آپریشن میں مزید آسانی ہو گئی ہے۔حج آپریشن بغیر کسی کرائے کے طیارے کے مکمل طور پر پی آئی اے کے اپنے طیاروں سے کیا جا رہا ہے۔

ترجمان پی آئی اے کا کہنا ہے کہ سی ای او ائر مارشل ارشد ملک نے طیارے کی بحالی ممکن بنانے پر پی آئی اے کے کارکنوں کو مبارکباد دیتے ہوئے اور بالخصوص انجینئرنگ ، فلائٹ آپریشن، فنانس اور سپلائی چین مینیجمنٹ کے شعبوں کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے انکے لئے تعریفی اسناد دینے کا اعلان کیا ہے۔

پی آئی اے ترجمان نے کہا ہے کہ ائر بس بی ایل وی کی بحالی کے بعد اب پی آئی اے کا کوئی طیارہ ماسوائے معمول کی چیکنگ کے گراونڈ نہیں ۔تفصیلات کے مطابق ایئر بس 320منگل کو رات 8بجے کراچی ایئرپورٹ سے اپنے ٹیسٹ فلائیٹ کی اور ایک گھنٹے بعد واپس کراچی ایئرپورٹ پر لینڈ کر گیا ،طیارے ایک سال سے زائد عرصے سے خرابی کی وجہ سے گرائونڈ کیا گیا تھا .

واضح رہے کہ گزشتہ برس ماہ اکتوبر میں وفاقی کابینہ نے ایئر وائس مارشل ارشد خان کو چیئرمین پی آئی اے تعینات کرنے کی منظوری دی تھی ،ارشد محمود ملک نے 1978 میں پاکستان ائیرفورس میں شمولیت اختیار کی جبکہ 1983 میں فائٹر پائلٹ میں کمیشنڈ حاصل کیا۔ انہوں نے نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی سمیت ائیر کمانڈ اینڈ اسٹاف کالج امریکا سے بھی تعلیم حاصل کی۔ارشد ملک چیئرمین پاکستان ایروناٹیکل کمپلیکس کامرہ سمیت دیگر کلیدی عہدوں پر تعینات رہ چکے ہیں۔ انہیں شاندار کیرئیر اور خدمات کے اعتراف میں اعلیٰ ترین سویلین ایوارڈ ہلال امتیاز (ملٹری)، ستارہ امتیاز (ملٹری) اور تمغہ امتیاز سے بھی نوازا جاچکا ہے۔

محمد اویس

Leave a reply