چاغی میں معدنیات و قدرتی وسائل کی یونیورسٹی کے قیام سے متعلق صادق سنجرانی کی ایچ ای سی حکام کو اہم ہدایات

چاغی میں معدنیات و قدرتی وسائل کی یونیورسٹی کے قیام سے متعلق صادق سنجرانی کی ایچ ای سی حکام کو اہم ہدایات

باغی ٹی ٹی وی رپورٹ کے مطابق چیئرمین سینیٹ محمد صادق سنجرانی سے ایچ ای سی کے حکام کی ملاقات ہوئی جس میں نو کنڈی، چاغی میں عمر خان سنجرانی معدنیات و قدرتی وسائل کی یونیورسٹی کے قیام سے متعلق پیش رفت سے آگاہ کیا،

ایچ ای سی حکام نے بریف کرتے ہوئے بتایا کہ یونیورسٹی کے قیام کیلئے پی سی (II) سی ڈی ڈبلیو پی سے پہلے ہی منظور ہو چکا ہے،تعمیراتی کام کی فزیبلٹی سٹڈی کیلئے ٹینڈر ز کے مراحل کے بعد کنسلٹنٹ کی خدمات حاصل کر لی گئی ہیں۔

کنسلٹنٹ موقع پر تعمیراتی کام کی نوعیت اور دیگر متعلقہ امور کا جائزہ لینے کے بعد ایک ماہ میں فزیبلٹی مکمل کرے گا۔منصوبے کی جائزہ رپورٹ 25 جنوری جبکہ تعمیرات کے آغاز کرنے سے متعلق حتمی رپورٹ 5 مارچ2021 تک جمع کروائی جائے گی۔چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ پاکستان میں معدنیات سے متعلق تعلیم اور ہنر کی ترقی میں عمر خان سنجرانی یونیورسٹی اہم سنگ میل ثابت ہوگی۔
چیئرمین سینیٹ نے ایچ ای سی حکام کو ہدایت کرتے ہوئےکہا کہ منصوبے کے معیار کو یقینی بنانے اور بروقت تکمیل کیلئے قابل عمل لائحہ عمل مرتب کیا جائے،چیئرمین سینیٹ کا کہنا تھا کہ 500 ایکڑ پر قائم کی جانے والی یہ مجوزہ یونیورسٹی اپنی نوعیت کا منفرد منصوبہ ہے۔ معدنیات سے مالا مال ملک میں فنی تعلیم سے آراستہ ہنر مند افراد اشد ضرورت ہے۔ایسے تعلیمی ادارے معدنیات کے فروغ کیلئے درکار افرادی قوت مقامی سطح پر فراہم کریں گے۔ اس منصوبے پر لاگت کا ابتدائی تخمینہ 6 ارب روپے لگایا گیا ہے۔

چیئرمین سینٹ محمد صادق سنجرانی کا کہنا تھا کہ منصوبے کی بروقت تکمیل کیلئے تمام متعلقہ ادارے مربوط کوششیں کریں۔منصوبے کے مختلف مراحل کی تکمیل دیئے گئے ٹائم فریم کے مطابق کی جائے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.