دریائے ستلج کے متعدد حفاظتی بند ٹوٹ گئے،60 سے زائد دیہات کے زمینی راستے منقطع

ستلج میں سیلاب سے بہت سے دیہات کا زمینی رابطہ منقطع ہوگیا ہے
0
91

ہیڈ سلیمانکی میں اونچے درجے کا سیلاب، پانی کے تیز بہاؤ کے باعث دریائے ستلج کے متعدد حفاظتی بند ٹوٹ گئے۔

باغی ٹی وی: ذرائع کے مطابق ہیڈ سلیمانکی میں پانی کی آمد اور اخراج ایک لاکھ 36 ہزار 6 سو 32 کیوسک ہوگیا، پانی کے تیز بہا ؤکی وجہ سے متعدد عا ر ضی حفاظتی بند اور سڑکیں ٹوٹ گئیں دریائی بیلٹ سے ملحقہ وسیع علاقہ زیر آب آ چکا ہے، جبکہ درجنوں آبادیوں کے چاروں اطراف پانی ہی پانی ہے-

ذرائع کے مطابق 60 سے زائد دیہات کے زمینی راستے منقطع ہوگئے، ہزاروں ایکڑ فصلیں، املاک تباہ ہوگئیں،انتظامیہ اور ریسکیو ٹیموں کی جانب سے اہل علاقہ کے ساتھ مل کر امدادی کارروائیاں جاری ہیں، ریسکیو ٹیمیں پانی میں پھنسے 8561 افراد کو نکال کر محفوظ مقا ما ت پرمنتقل کر چکی ہیں سیلابی ریلہ ہیڈ اسلام وہاڑی پہنچنے کی اطلاعات سامنے آ رہی ہیں، جس کے باعث ہیڈ اسلام میں پانی کی سطح 94000 کیوسک ہوچکی ہے۔

راولپنڈی سے 2100 کلو مردہ مرغیوں کی کھیپ پکڑی گئی

ترجمان پی ڈی ایم اے کے مطابق قصور، بہاولنگر، اوکاڑہ، پاکپتن، ساہیوال اور وہاڑی کی ہزاروں ایکڑ اراضی زیرآب، فصلیں تباہ ہوچکی ہیں، ستلج میں سیلاب سے بہت سے دیہات کا زمینی رابطہ منقطع ہوگیا ہے، جبکہ متاثرہ افراد امداد کے منتظر ہیں۔

دوسری جانب راولپنڈی اور اسلام آباد میں موسلا دھار بارش کے بعد پنڈی میں رین ایمرجنسی نافذ کردی گئی ایم ڈی واسا کے مطابق اسلام آباد اور راولپنڈی کے بعض علاقوں میں گرج چمک کے ساتھ بارش ہوئی جس کے سبب رین ایمرجنسی نافذ کی گئی ہے شہر میں نکاسی آب کے لیے ہیوی مشینری و عملہ نشیبی علاقوں میں تعینات کردیا گیا ہے، اس کے علاوہ نالہ لئی اور دوسرے نالوں کی مانیٹرنگ بھی کی جا رہی ہے آزاد کشمیر کے مختلف علاقوں غذر اور دیربالا میں بھی تیز ہواؤں کے ساتھ بارش ہوئی محکمہ موسمیات کے مطابق آج اسلام آباد، بالائی پنجاب، خطہ پوٹھوہار، خیبر پختونخوا، گلگت بلتستان اور کشمیر کے بعض مقامات پر موسلادھار بارش کا امکان ہے۔

خیبر پختونخوا کے متعدد اضلاع میں درجنوں مقامی چیئر لفٹس بند

Leave a reply