شوبز سے وابستہ لڑکیوں سے کروائی جا رہی جسم فروشی، 60 ہزار میں ہوتا ہے "سودا”

0
76

شوبز سے وابستہ لڑکیوں سے کروائی جا رہی جسم فروشی، 60 ہزار میں ہوتا ہے "سودا”

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق بھارت میں جسم فروشی ایک کاروبار بن چکا ہے، آئے روز جسم فروشی کے اڈوں کے خلاف کاروائیاں ہوتی ہیں لیکن پھر بھی اس دھندے میں کمی نہیں آ رہی،

بھارتی علاقے ممبئی سے مہاراشٹر پولیس نے فحاشی کے اڈے پر چھاپہ مارا جہاں انکشاف ہوا کہ اس جسم فروشی کے اڈے میں بالی ووڈ اداکارائیں بھی دستیاب ہوتی ہیں اور ان کا ریٹ 60 ہزار روپے ہے،پولیس نے ممبئی کے علاقے ورسوا میں چھاپے کے دوان فحاشی کا اڈہ چلانے والے ملزم کو گرفتار کر لیا .

پولیس کے مطابق جسم فروشی کا اڈہ ایسی جگہ بنایا گیا تھا جہاں دیکھ کر ایسے لگتا تھا کہ یہاں فلموں کا کام ہوتا ہے کوئی دفتر ہے لیکن اس دفتر کی آڑ میں غلط کام ہو رہا تھا،پولیس نے اس فحاشی کے اڈے کے کاسٹنگ ڈائریکٹر32 سالہ نویل کو گرفتار کر لیا ،پولیس نے ملزم کو اسوقت گرفتار کیا جب وہ گاہکوں کے ساتھ شوبز انڈسٹری سے وابستہ 2 اداکاراوں کا ساٹھ ساٹھ ہزار میں سودا طے کر رہا تھا.

گرفتاری کے بعد ملزم نے پولیس کو بتایا کہ جن لڑکیوں کا سودا کیا جا رہا تھا وہ دونوں لڑکیاں مغربی بنگال سے تعلق رکھتی ہیں اور جسم فروشی کے اسی نیٹ ورک کے کارندے اشون کمار کے ذریعے ممبئی آئیں ۔ جسم فروشی کا یہ نیٹ ورک گزشتہ کئی ماہ سے چل رہا تھا جس میں بالی ووڈ کی کئی اداکاراﺅں کے ملوث ہونے کا بھی امکان ظاہر کیا جارہا ہے۔

کچھ ماہ پہلے ممبئی کے پوش علاقے جوہو سے بھی اسی قسم کا نیٹ ورک پکڑا گیا تھا جس میں غیر ملکی لڑکیوں اور بالی ووڈ ادکاراﺅں اور ماڈلز کو جسم فروشی کیلئے پیش کیا جاتا تھا۔

بھارتی ریاست مہاراشٹر کے دارالحکومت ممبئی کی پولیس نے خفیہ اطلاع پر کارروائی کرتے ہوئے امرتا دھنووا سمیت خوبرو ماڈل ریچا سنگھ کو بھی جسم فروشی کا کاروبار چلانے کے الزام میں گرفتار کرلیا۔امرتا دھنووا حال ہی میں نشر ہونے والے متنازع ریئلٹی شو ’بگ باس 13‘ میں شریک ہوئی تھیں اور اس میں دوسرے ساتھیوں کے ساتھ تنازعات کی وجہ سے انہوں نے کافی شہرت بھی حاصل کی تھی

علاوہ ازیں ماضی میں امرتا دھنووا چند بالی وڈ فلموں میں بھی اداکاری کے جوہر دکھائے جب کہ وہ فیشن شوز میں کیٹ واک کرنے سمیت ماڈلنگ کرتی دکھائی دیتی رہی ہیں

بھارتی اخبار ’انڈیا ٹوڈے‘کی رپورٹ کے مطابق ممبئی پولیس کی جانب سے ایک نجی ہوٹل پر مارے گئے چھاپے کے بعد اداکارہ امرتا دھنووا اور ماڈل ریچا سنگھ کو گرفتار کیا گیا دونوں اداکاراؤں و ماڈلز پر الزام ہے کہ وہ نجی ہوٹل میں جسم فروشی کے لیے نوجوان اور خوبرو لڑکیوں کی سپلائی کرتی تھیں دونوں پر الزام ہے کہ وہ نوجوان اور کالج کی لڑکیوں کو مختلف قسم کے لالچ دے کر ان سے جسم فروشی کروا رہی تھیں

رپورٹ میں بتایا گیا کہ ان پر شک کے بعد جسم فروشی کے کاروبار سے پردہ اٹھانے کے لیے ممبئی پولیس کا ایک افسر نجی ہوٹل میں جسم فروش گاہک بن کر گیا تھا اور وہاں مذکورہ سہولیت میسر ہونے کے بعد ہی پولیس نے اداکارہ و ماڈل کو گرفتار کیا اور ان پر تعزیرات ہند کی شق 370 (3) اور سیکشن 4 اور پانچ کے تحت مقدمہ دائر کرلیا گیا۔

فحاشی کے اڈے پر چھاپہ، پولیس کو ملیں صرف خواتین ،پولیس نے کیا کام سرانجام دیا؟

جادو سیکھنے کے چکر میں بھائی کے بعد ملزم نے کس کو قتل کروا دیا؟

پولیس کا ریسٹورنٹ پر چھاپہ، 30 سے زائد نوجوان لڑکے لڑکیاں گرفتار

واٹس ایپ پر محبوبہ کی ناراضگی،نوجوان نے کیا قدم اٹھا لیا؟

غیرت کے نام پر سنگدل باپ نے 15 سالہ بیٹی کو قتل کر دیا

بیوی طلاق لینے عدالت پہنچ گئی، کہا شادی کو تین سال ہو گئے، شوہر نہیں کرتا یہ "کام”

50 ہزار میں بچہ فروخت کرنے والی ماں گرفتار

ایم بی اے کی طالبہ کو ہراساں کرنا ساتھی طالب علم کو مہنگا پڑ گیا

ایک رپورٹ کے مطابق 1997 میں بھارت میں جسم فروش عورتوں کی تعداد تقریبا بیس لاکھ تھی جو، اب بڑھ کر پینتیس چالیس لاکھ ہو چکی ہے۔ اس دھندے میں ملوث نوے فیصد خواتین کی عمریں پندرہ سے پینتیس سال کی ہیں۔ گزشتہ دنوں دہلی کے جی بی روڈ میں ایک جنسی اڈے کا انکشاف ہوا تو لوگ دنگ رہ گئے۔ دہلی پولیس نے آفاق اور اس کی بیوی سائرہ کو گرفتار کیا۔ ان کے پاس چالیس کمروں والے چھ کوٹھے تھے، جن میں ڈھائی سو لڑکیاں تھیں۔ تحقیقات میں پتہ چلا کہ آفاق کی ہر روز کی کمائی دس لاکھ روپے سے زیادہ تھی۔ اس کا پورا گروہ ہے جس میں زیادہ تر لڑکیاں مغربی بنگال، جھارکھنڈ، نیپال، بہار سے لائی گئی تھیں۔ کوٹھوں پر لڑکیوں کو قبضے میں رکھنے کے لئے دبنگ خواتین تعینات تھیں.

Leave a reply