fbpx

سکھ لڑکی مسلمان ہوگئی ، مسلمان نوجوان سے شادی کرنے پر معاملہ الجھ گیا ، حل کے لیے کمیٹی قائم

لاہور:سکھ لڑکی نے مذہب اسلام قبول کرنے کے بعد مسلمان نوجوان سے شادی کرنا چاہی تو خاندان آڑے گیا ، اطلاعات کے مطابق وزیراعلی پنجاب سردار عثمان احمد خان بزدار نے ننکانہ صاحب میں سکھ لڑکی کی مسلمان نوجوان سے شادی کے معاملے کا نوٹس لے لیاہے،انہوں نے اس ضمن میں تحقیقات کیلئے کمیٹی بھی قائم کر دی ہے۔

ذرائع کے مطابق وزیراعلی پنجاب کی جانب سے قائم کردہ کمیٹی میں وزیر قانون راجہ بشارت، وزیر توانائی ڈاکٹر اختر ملک اور وزیر ڈیزاسٹر مینیجمنٹ خالد محمود شامل ہیں۔سردار عثمان احمد خان بزدار نے کمیٹی کو اس معاملے کی ہر پہلو سے تحقیقات کرکے جلد از جلد رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔

ننکانہ سے ذرائع کے مطابق وزیراعلی پنجاب سردار عثمان بزدار نے کمیٹی ارکان کو لڑکی کے اہل خانہ سے رابطہ کرنے اور اس معاملے میں انصاف کے تمام تقاضے پورے کرنے کا بھی کہا ہے۔

یاد رہے کہ ننکانہ صاحب کے سکھ خاندان نے ویڈیو بیان میں الزام عائد کیا تھا کہ لڑکی کو اغواء کے بعد زبردستی مذہب تبدیل کروا کر شادی کی گئی ہے۔ متاثرہ خاندان نے حکام سے انصاف کی فراہمی کا مطالبہ بھی کیا ہے۔