fbpx

شرمین عبید چنائے کی صنفی بنیادی حقوق پر بنائی گئی دستاویزی فلم "ڈے ٹائم ایمی ایوارڈز” کیلئے نامز

پاکستانی فلم ساز شرمین عبید چنائے کی صنفی بنیادی حقوق پر بنائی گئی دستاویزی فلم سیریز امریکا کے ’ڈے ٹائم ایمی ایوارڈز‘ کے لئے نامزد کی گئی ہے –

باغی ٹی وی: ’ڈے ٹائم ایمی ایوارڈز‘ امریکا کی ٹیلی وژن سمیت وہاں پر ڈیجیٹل پلیٹ فارم پر ریلیز ہونے والے ڈراموں، فلموں اور دستاویزی فلموں سمیت شوز کو دیے جانے والا سب سے بڑا ایوارڈ ہے جس میں پاکستانی فلمساز کی سیریز نے مذکورہ ایوراڈز میں دو نامزدگیاں حاصل کیں ہیں-

’ڈے ٹائم ایمی ایوارڈز‘ کی رواں برس 48 ویں تقریب منعقد کی جائے گی، جس کے لیے امریکا میں ریلیز ہونے والے ڈراموں، فلموں، دستاویزی فلموں اور شوز کی نامزدگیوں کا اعلان کردیا گیا۔

اہم ترین ایوارڈ کے لیے جہاں امریکا سمیت دنیا کے دیگر ممالک کے فلم سازوں کی ڈاکیومینٹریز، فلمیں اور سیریز نامزد ہوئیں، وہیں پاکستانی فلم ساز شرمین عبید چنائے کی بھی عالمی سیریز دو ایوارڈز کے لیے نامزد کی گئی ہے۔

شرمین عبید چنائے نے انسٹاگرام پوسٹ میں بتایا کہ ان کے اداروں کی جانب سے ان کی ہدایت کاری میں تیار کی گئی عالمی سیریز ’فنڈامینٹل، جینڈر جسٹس: نو ایکسیپشن‘ کو ’ڈے ٹائم ایمی ایوارڈز‘ کی دو کیٹیگریز میں نامزد کیا گیا ہے۔

شرمین نے بتایا کہ ان کی جانب سے تیار کی گئی عالمی سیریز کو ایوارڈز کی دو کیٹیگریز ’بیسٹ ڈائریکٹنگ ٹیم، سنگل کیمرہ: نان فکشن‘ اور ’بیسٹ شارٹ فلم، نان فکشن‘ کے لیے نامزد کیا گیا ہے مذکورہ دونوں کیٹیگریز میں شرمین عبید چنائے کی سیریز کا مقابلہ 4 دیگر نان فکشن سیریز سے ہوگا۔

’ڈے ٹائم ایمی ایوارڈز‘ فکشن، نان فکشن، چلڈرن، اینیمیشن اور اسپینش زبان‘ کی کیٹیگریز میں مجموعی طور پر 56 کیٹیگریز میں ڈراموں، فلموں اور ڈاکیومینٹریز سمیت سیریز کو نامزد کیا ہے۔

مذکورہ ایوارڈز کی ہر کیٹیگری میں پانچ فلموں، ڈراموں یا دستاویزی فلموں کو نامزد کیا گیا ہے، جس میں سے کسی ایک کو ایوارڈ کے لیے منتخب کیا جائے گا اور فاتحین کا اعلان آئندہ ماہ جولائی میں کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ شرمین عبید چنائے کی سیریز ’فنڈامینٹل، جینڈر جسٹس: نو ایکسیپشن‘ کو پانچ حصوں میں گزشتہ برس ’یوٹیوب اوریجنل‘ پر ریلیز کیا گیا تھا جسے شرمین عبید چنائے فلمز نے عالمی فنڈ ’گلوبل فنڈ فار وویمن‘ کے تعاون سے تیار کیا تھا اور سیریز میں پاکستان سمیت پانچ مختلف ممالک کی خواتین کی حقیقی کہانیاں دکھائی گئی تھیں اور سیریز کو پاکستان، برازیل، امریکا، کینیا اور جارجیا میں شوٹ کیا گیا تھا-