fbpx

نیب نے سابق خاتون اول کی دوست کے حوالے سے وضاحت کردی

لاہور:نیب نے سابق خاتون اول کی دوست کے حوالے سے وضاحت کردی،اطلاعات کے مطابق لاہور نیب کی طرف سے ایک پیغام جاری کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ نیب لاہور سابق خاتون اول کی دوست فرح خان کے خاوند کے خلاف تحقیقات کرنے کا ارادہ رکھتی ہے ،

نیب نے اس حوالے سے یہ بھی وضاحت کردی ہے کہ فرح خان کے خاوند نوازشریف کے دورحکومت 1997 سے 1999 کے دوران گوجرانوالا میں چئرمین کے عہدے پر فائز رہے ، جس کے دوران پبلک آفس ہولڈرہونے کی وجہ سے ان کے خلاف تحقیقات کا فیصلہ کیا ہے ہے

نیب اعلامیے میں فرح خان کے خاوند احسن جمیل گجر کے حوالے سے واضح کہا گیاہے کہ وہ چونکہ ایک عہدے پر فائز رہے اب انٹی منی لانڈرنگ کے قوانین کے تحت ان کے خلاف تحقیقات کا فیصلہ کیا ہے

یاد رہےکہ نیب کا یہ بیان اس وقت سامنے آیا ہے جب سابق وزیراعظم عمران خان نے فرح خان کے حوالے سے کہا تھا کہ فرح خان کے خلاف کیسزایک حربہ ہے

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین و سابق وزیراعظم عمران خان نے پریس کانفرنس میں اپنی اہلیہ بشریٰ بی بی کی دوست فرح خان کو بے قصور قرار دے دیا۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس میں عمران خان نے فرح خان کو بے قصور قرار دیتے ہوئے کہاکہ فرح خان کے خلاف انتقامی کارروائی ہورہی ہے کیونکہ وہ میری اہلیہ کی دوست ہیں۔

 

ان کا کہنا تھاکہ فرح خان پر انہوں نے بالکل غلط کیس کیا ہے، وہ عرصے سے ریئل اسٹیٹ کا کام کرتی ہے، انہوں نے جمائما پر بھی ٹائلوں کا کیس بنایا تھا۔

عمران خان کا کہنا تھاکہ بشریٰ بیگم کا تو کوئی بینک اکاؤنٹ نہیں، اس سب کا مقصد مجھ پر اٹیک کرانا ہے، فرح خان بالکل بے قصور ہے، کہا گیا کہ فرح خان کی دولت میں 3 سال میں بہت اضافہ ہوا، ریئل اسٹیٹ میں پچھلے3 سال میں ویسے ہی بہت پیسہ آیا ہے۔

خیال رہے کہ گزشتہ دنوں قومی احتساب بیورو (نیب) نے 2018 کے بعد فرح گجر کے اثاثوں میں غیر معمولی اثاثوں کی تحقیقات کا باقاعدہ آغاز کر دیا ہے جبکہ پیپلزپارٹی اور ن لیگ کی جانب سے بھی فرح خان پر کرپشن کے الزامات لگائے گئے ہیں۔