ظل شاہ کی موت چھپانے پر عمران خان ،یاسمین راشد پر مقدمہ درج

0
37

لاہور: زمان پارک میں پولیس اور پی ٹی آئی کارکن کے تصادم کے نتیجے میں جاں بحق ہونے والے کارکن علی بلال عرف ظل شاہ کی موت کو ٹریفک حادثہ قرار دیتے ہوئے دوسرا مقدمہ درج کرلیا گیا۔

باغی ٹی وی: علی بلال عرف ظل کے قتل کا مقدمہ تفتیشی افسر کی مدعیت میں تھانہ سرور روڈ میں درج کیا گیا۔ پولیس نےعلی بلال کواسپتال منتقل کرنےوالےملزمان کےبیان پرمقدمہ درج کیا۔

کراچی: پولیس نے پی ٹی آئی رہنما ارسلان تاج کی گرفتاری ظاہر کردی،مقدمہ درج،انسداد …

لاہور میں پولیس نے علی بلال عرف ظلِ شاہ کی موت کو ٹریفک حادثہ قرار دے کر چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کے خلاف ایک اور مقدمہ درج کر لیا،مقدمے میں ٹریفک حادثہ، قتل بالسبب اور ثبوت و حقائق کو چھپانے کی دفعات شامل کی گئی ہیں۔

ایف آئی آر کے متن میں لکھا گیا ہے کہ ملزمان کے بیان کے مطابق درمیان سڑک میں چلتے ہوئے علی بلال کو تیز رفتا رویگو ڈالے نے ٹکرماری زخمی حالت میں علی بلال کوسروسزاسپتال منتقل کیا لیکن وہ دم توڑگیاملزمان موت کی اطلاع ملتےہی اسپتال سےفرارہوگئے –

ظل شاہ کے کیس میں عمران خان اور یاسمین راشد بھی گرفتار ہوں گے،وزیر اطلاعات …

ایف آئی آر میں لکھا گیا ہے کہ ویگو گاڑی نجی کمپنی کے زیراستعمال میں ہے، انتظامیہ نے حادثے کا عمران خان کوبتایا، کمپنی کے ڈائریکٹرراجہ شکیل نے یاسمین راشد کے ساتھ زمان پارک جاکراطلاع دی۔ متن میں لکھا گیا ہے کہ عمران خان، یاسمین راشد، فواد چوہدری سمیت دیگر رہنماؤں نے حقائق کو دانستہ چھپایا، انہوں نے پولیس کو اطلاع نہ کی۔

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں علی بلال کی موت واقع ہوئی تھی، پاکستان تحریک انصاف کا دعویٰ کیا ہے کہ علی بلال پولیس تشدد سے جاں بحق ہواابتدائی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں علی بلال کی موت کی وجہ تشدد سامنے آئی ہے جبکہ پولیس نے اسپتال چھوڑ جانے والے افراد کی تصاویر بھی جاری کی تھیں۔

بعد ازاں پاکستان تحریک انصاف کے کارکن علی بلال عرف ظلِ شاہ کو اسپتال چھوڑ کر جانے والے دونوں افراد کو حراست میں لے لیا گیا تفتیشی ٹیم نے علی بلال کو لانے والی گاڑی کوبھی قبضے میں لے لیا اور حراست میں لیےگئے ملزمان میں عمر اورجہانزیب شامل ہیں۔

حب :سابق وزیراعلی بلوچستان جام کمال نے نومنتخب کونسلرعظیم سیاں کی والدہ کی وفات پر …

ظل شاہ کی موت پر عمران خان اور دیگر رہنماؤں پر مقدمہ درج ہونے کے بعد تحریک انصاف کے رہنما فرح حبیب کا کہنا ہے کہ آئین اور قانون کی دھجیاں اُڑائی جارہی ہیں،عمرا ن خان کے خلاف مقدمات درج ہورہے ہیں ایک ایف آئی آر کی 2 جگہوں پر اندراج نہیں ہوسکتا ،ظل شاہ پر تشدد ہوا جو سب کے سامنے ہے ،قربان اسٹیڈیم کے قریب ظل شاہ کی لاش ملتی ہے مگر فوٹیج نہیں

دوسری جانب لاہور ہائیکورٹ میں پی ٹی آئی کارکن ظل شاہ کی ہلاکت کی تحقیقات کے لیے جوڈیشل کمیشن بنانے کی درخواست دائر کردی گئی لاہورہائیکورٹ میں ظل شاہ کی موت کی تحقیقات کے لیے جوڈیشل کمیشن بنانے کی درخواست ایڈووکیٹ ندیم سرور کی جانب سے دائر کی گئی ہے درخواست میں پنجاب حکومت، آئی جی پولیس اور ڈپٹی کمشنر سمیت دیگر کو فریق بنایا گیا ہے درخواستگزار نے عدالت سے استدعا کی ہے کہ ظل شاہ کی ہلاکت کی تحقیقات کے لیے عدالتی کمیشن تشکیل دیا جائے

Leave a reply