fbpx

اچھی نوکری کا جھانسہ دے کر غیر ملکی لڑکی سے کیا گیا گھناؤنا کام

اچھی نوکری کا جھانسہ دے کر غیر ملکی لڑکی سے کیا گیا گھناؤنا کام

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ملازمت دینے کے بہانے نوجوان نے غیر ملکی لڑکی کے ساتھ زیادتی کر ڈالی، واقعہ بھارت میں پیش آیا

بھارتی میڈیا کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ نوکری کا کہہ کر ایک خاتون بنگلہ دیشی لڑکی کو بھارتی شہر بنگلور لائی جس کے بعد اسے ایک کمرے میں بند کردیا گیا اور پھر وہاں پر ایک نامعلوم درندہ اس کے ساتھ زیادتی کرتا رہا

پولیس نے واقعہ کا مقدمہ درج کر لیا ہے، پولیس کا کہنا ہے کہ بنگالی لڑکی کو بنگلور لانے کے بعد اسے جسم فروش بننے کے لئے مجبور کیا گیا۔ متاثرہ لڑکی کا کہنا ہے کہ اسے بہتر روزگار کا کہا گیا تھا، لیکن مجھے نہیں معلوم تھا کہ وہ مجھ سے جسم فروشی کروائیں گے.

پولیس کے مطابق بنگالی لڑکی کو چار دن تک مسلسل ایک کمرے میں بند کرکے زیادتی کا نشانہ بنایا جاتا رہا۔ بعد ازاں لڑکی موقع دیکھ کر فرار ہوئی اور پولیس اسٹیشن پہنچی .پولیس کا کہنا ہے کہ ملزمان کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں،

سکول جانے والی طالبات کو تنگ کرنے والا نوجوان شہریوں کے ہتھے چڑھ گیا جس پر اس کی خوب پٹائی کی گئی اور بعد ازاں پولیس کے حوالے کر دیا گیا

واقعہ بھارتی ریاست ہریانہ میں پیش آیا، جب امبالہ میں سکول جانے والی طالبات نے اپنے گھروں میں بتایا کہ انہیں ایک نوجوان راستے میں سکول جاتے ہوئے تنگ کرتا ہے اور فحش اشارے کرتا ہے، اس نوجوان کی وجہ سے طالبات نے سکول جانا چھوڑ دیا تھا گھر والوں کی جانب سے استفسار پر طالبات نے یہ بات بتائی .

طالبات کے بتانے پر ان کے گھر والے انکے ساتھ آئے اور فحش اشارے کرنے والے نوجوان کو پکڑ لیا اور بازار میں اس کی خوب پٹائی کی، بعدازاں اسے پولیس کے حوالے کر دیا گیا. خواتین کی جانب سے پٹائی کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی ہے.

فحاشی کے اڈے پر چھاپہ، پولیس کو ملیں صرف خواتین ،پولیس نے کیا کام سرانجام دیا؟

جادو سیکھنے کے چکر میں بھائی کے بعد ملزم نے کس کو قتل کروا دیا؟

پولیس کا ریسٹورنٹ پر چھاپہ، 30 سے زائد نوجوان لڑکے لڑکیاں گرفتار

واٹس ایپ پر محبوبہ کی ناراضگی،نوجوان نے کیا قدم اٹھا لیا؟

غیرت کے نام پر سنگدل باپ نے 15 سالہ بیٹی کو قتل کر دیا

بیوی طلاق لینے عدالت پہنچ گئی، کہا شادی کو تین سال ہو گئے، شوہر نہیں کرتا یہ "کام”

50 ہزار میں بچہ فروخت کرنے والی ماں گرفتار

ایم بی اے کی طالبہ کو ہراساں کرنا ساتھی طالب علم کو مہنگا پڑ گیا

پولیس نے ملزم کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے اور کاروائی شروع کر دی ہے، بعد ازاں ملزم کے گھر والے بھی تھانے پہنچے اور ملزم کے بھائی نے بیان دیتے ہوئے کہا کہ ملزم ایک دکان پر کام کرتا تھا اس کو کئے کی سزا ملنی چاہئے، ہم اس کی ضمانت نہیں کروائیں گے

ایک رپورٹ کے مطابق 1997 میں بھارت میں جسم فروش عورتوں کی تعداد تقریبا بیس لاکھ تھی جو، اب بڑھ کر پینتیس چالیس لاکھ ہو چکی ہے۔ اس دھندے میں ملوث نوے فیصد خواتین کی عمریں پندرہ سے پینتیس سال کی ہیں۔ گزشتہ دنوں دہلی کے جی بی روڈ میں ایک جنسی اڈے کا انکشاف ہوا تو لوگ دنگ رہ گئے۔ دہلی پولیس نے آفاق اور اس کی بیوی سائرہ کو گرفتار کیا۔ ان کے پاس چالیس کمروں والے چھ کوٹھے تھے، جن میں ڈھائی سو لڑکیاں تھیں۔ تحقیقات میں پتہ چلا کہ آفاق کی ہر روز کی کمائی دس لاکھ روپے سے زیادہ تھی۔ اس کا پورا گروہ ہے جس میں زیادہ تر لڑکیاں مغربی بنگال، جھارکھنڈ، نیپال، بہار سے لائی گئی تھیں۔ کوٹھوں پر لڑکیوں کو قبضے میں رکھنے کے لئے دبنگ خواتین تعینات تھیں.