ڈرامہ سیریل ارتغرل تنقیدکا نشانہ ، آخر کیوں ، تحریر: ابوتراب مغل

0
116

ڈرامہ سیریل ارتغرل ہی تنقیدکا نشانہ ، آخر کیوں
ابوتراب مغل
باغی ٹی وی :ڈرامے میں موجود ارتغل کا کردار نبھانے والے یا اس مکمل ڈرامے سے مجھے کوئی سروکار نہیں۔ لیکن ایک بات تو عیاں ہورہی ہے کہ اس ڈرامے کی آڑ میں دراصل خلافت عثمانیہ سے بغض کا اظہار کیا جارہا ہے۔ ڈرامے میں موجود جعلی ارتغل کو بنیاد بنا کر اس دور کے حقیقی ارتغل رحمہ اللہ کو بھی مورد تنقید بنایا جارہا ہے۔ دلائل بھی منضبط کیے جارہے ہیں۔ حقیقی ہدف تنقید تاریخ اسلام کی طویل ترین خلافت و سلطنت عثمانیہ ہے۔ جب یہ سیریل نہیں بنا تھا تب کونسا تم لوگ خلافت عثمانیہ کے گن گاتے تھے؟ ڈرامہ ڈرامہ ہی رہنے دیں۔ اس میں سچ اور جھوٹ دونوں کی آمیزیش ہے۔ مجھے بھی کئی باتوں پر اختلاف ہے۔ اگر آپ کو اس سیریل کو ہی تنقید کا نشانہ بنانا ہے تو بارہویں صدی کے حقیقی ارتغل کو تو معاف کردیں۔ وہ اپنے دور کا مجاہد فی سبیل اللہ تھا۔ عثمانیوں کو موضوع بنا کر تنقید کرنے کا مجاز میں بھی ہوں لیکن میں اس حقیقت سے دور نہیں بھاگتا کہ بالآخر ہمارے پاس نظام تو موجود تھا ناں۔۔۔ خواہ نام کا ہو کر رہ گیا تھا۔ لیکن پھر بھی عثمانیوں کی اکثریت نے مقدسات کا تحفظ کیا ہے۔ غدار تو ہر قوم میں ہوتا ہے۔ تم جن کی کاسہ لیسی کرتے ہو کیا وہ غداری سے پاک ہیں؟
ڈرامے کو ڈرامہ رہنے دیں۔ اگر تنقید کا اتنا ہی شوق تھا تو ایرانی سیریل مختار ثقفی پر کرتے جس میں عبد اللہ بن عمر اور ابن زبیر رضی اللہ عنھم کے مبارک کرداروں کو داغدار کیا گیا تھا۔ تب تم خاموش تھے۔ یہ خاموشی مجرمانہ تھی۔ اب میں یہ نہیں کہتا کہ ارتغل سیریل دودھ کا دھلا ڈرامہ ہے لیکن حقیقی ارتغل کو سامنے لاو ناں۔ اس اصل ارتغل کا کیا قصور ہے؟

Leave a reply