fbpx

بھارت نے امریکا سے خنزیر کا گوشت درآمد کرنے کی اجازت دے دی

واشنگٹن: بھارت نے پہلی بار امریکا سے خنزیر کے گوشت اور اس سے بننے والی مصنوعات درآمد کرنے کی اجازت دے دی-

باغی ٹی وی :"روئٹرز” کے مطابق امریکا نے بھارت کے اس فیصلے کا خیر مقدم کیا ہے جس میں خنزیر کے گوشت اور اس سے بنی مصنوعات پر عائد پابندی ہٹا دی گئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق امریکا کے زراعت کے سیکرٹری ٹام ویلسیک اور امریکی تجارتی نمائندے کیتھرین تائی نے اپنے بیان میں کہا کہ بھارت کا امریکا سے خنزیر کے گوشت کو اپنی مارکیٹ تک رسائی حاصل دینے کا فیصلہ دونوں ممالک کے درمیان تجارتی تعلقات میں مثبت پیشرفت ہے۔

ولسیک نے کہا کہ واشنگٹن اس بات کو یقینی بنانے کے لیے کام کر رہا ہے کہ امریکی خنزیر کا گوشت صنعت جلد از جلد ہندوستان کو مصنوعات کی ترسیل شروع کر سکے انہوں نے کہا کہ یہ معاہدہ ہندوستان میں امریکی خنزیر کے گوشت کے لیے مارکیٹ تک رسائی حاصل کرنے کے لیے دو دہائیوں کے اختتام کو نشان زد کرتا ہے۔

2020 میں، ریاستہائے متحدہ دنیا کا تیسرا سب سے بڑا خنزیر کا گوشت تیار کرنے والا اور دوسرا سب سے بڑا برآمد کنندہ تھا، جس کی عالمی سطح پر سور اور خنزیر کے گوشت کی مصنوعات کی فروخت کی مالیت 7.7 بلین ڈالر تھی۔ مالی سال 2021 میں، امریکہ نے ہندوستان کو 1.6 بلین ڈالر سے زیادہ کی زرعی مصنوعات برآمد کیں۔

بھارتی جیلوں میں نظربند کشمیری سیاسی رہنمائوں کی زندگیوں کو شدید خطرہ:تازہ واقعہ میں کشمیری جانبحق

گزشتہ برس نومبر میں بھارتی دارالحکومت میں منعقد ہونے والی ’’ٹریڈ پالیسی فورم‘‘ میں امریکی نمائندے کیتھرین تائی نے امریکا سے خنزیر کے گوشت کی بھارتی منڈی تک رسائی کی اہمیت پر زور دیا تھا۔

نئی ​​دہلی میں ایک بحال شدہ یو ایس انڈیا تجارتی پالیسی فورم میں، ہندوستان اور امریکہ نے کچھ زرعی مصنوعات کی تجارت کو بڑھانے پر اتفاق کیا، جس میں امریکی چیری، الفالفا اور ڈسٹلر خشک اناج کے ساتھ ساتھ ہندوستانی آم، انگور، جھینگا اور پانی کی بھینسیں کا گوشت شامل ہیں۔

بھارت اور امریکا کے درمیان تجارتی معاہدوں کے باعث امریکا نے ایک ارب 60 لاکھ ڈالر کی صرف زرعی مصنوعات بھارت برآمد کی تھیں اور اب خنزیر کے گوشت کی کی بھی اربوں ڈالر کی برآمدات متوقع ہیں-

بھارتی جیلوں میں نظربند کشمیری سیاسی رہنمائوں کی زندگیوں کو شدید خطرہ:تازہ واقعہ میں کشمیری جانبحق

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!