براڈ شیٹ اثاثے ڈھونڈنے کی کمپنی،پاکستان کے ساتھ کیا معاہدہ؟ شہزاد اکبر نے تفصیلات بتا دیں

0
45

براڈ شیٹ اثاثے ڈھونڈنے کی کمپنی،پاکستان کے ساتھ کیا معاہدہ؟ شہزاد اکبر نے تفصیلات بتا دیں

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق مشیر داخلہ و احتساب شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ نوازشریف نے قوم کے ساتھ جھوٹ بولا،

شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ جھوٹ کا سلسلہ پانامہ سے شروع ہوا جو اب تک جاری ہے،نوازشریف نےگزارشات میں بھی غلط بیانی سے کام لیا،پانامہ فیصلے میں نوازشریف جھوٹےقرارد یئے گئے،نوازشریف آئین کے آرٹیکل 62 اور63 پرپورے نہیں اترتے،نوازشریف نے اپنے جھوٹ کے لیے پارلیمنٹ کا فورم استعمال کیا،نوازشریف نے جھوٹ بول کرقوم کوگمراہ کیا،مسلسل جھوٹ بولاگیا کہ کرپشن نہیں اقامہ پر فیصلہ سنایاگیا،

شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ مریم نواز نے کہا منی لانڈرنگ کیا پاکستان میں بھی جائیدادنہیں، نوازشریف کو منی لانڈرنگ کی وجہ سے ہی نکالا گیا،نوازشریف کابیانیہ جھوٹ پرمبنی ہے،شریف خاندان نے لندن سے آنے والی خبروں پر قبل از وقت مٹھایاں بانٹیں،براڈ شیٹ ایک ایسٹ ٹریسنگ کمپنی تھی جسے ایک ایگریمنٹ کے تحت ہائر کیا گیا،حکومت پاکستان نے براڈ شیٹ کے ساتھ کچھ عرصہ کے بعد یہ کنٹریکٹ ختم کر دیابراڈ شیٹ آرٹریبیوشن میں چلی گئی اور کہا کہ ہمیں 20 فیصد معاہدہ کے تحت ادا ئیگی کی جائے،اکتوبر 2009 میں براڈ شیٹ نے پیپلزپارٹی دور میں کیس شروع کیا،مصالحتی عدالت میں یہ کیس 2016تک چلتا رہا،

شہزاد اکبر کا مزید کہنا تھا کہ خواجہ آصف نے 2 سال گزرنے کے بعد بھی ثبوت پیش نہیں کیے،معاہدہ تھا کہ جتنی ریکوری ہوگی 20 فیصد براڈ شیٹ کودی جائے گی،براڈ شیٹ اثاثے ڈھونڈنے کی کمپنی ہے،براڈ شیٹ کی خدمات حکومت پاکستان نے 2000 میں حاصل کیں،اس وقت کی حکومت نے براڈ شیٹ کو200 افراد کے اثاثے ڈھونڈنے کا کام دیا گیا تھا ،احسن اقبال پر بھی اقامہ کیس ہے یہ صرف ن لیگی رہنماوَں پر ہی کیوں؟

شہزاد اکبر کا مزید کہنا تھا کہ نوازشریف اشتہاری ڈکلیئرہوچکے ہیں،حکومت کی کوشش ہے کم سے کم پرائیویٹ فرم کا استعمال کیا جائے،میری اطلاعات کے مطابق اسحاق ڈار نے پناہ کے لیے اپلائی کیا ہے، نواز شریف سزا یافتہ اور کیس سنجیدہ ہے،میڈیکل بورڈ نے نوازشریف کی صحت پرساری رپورٹ دی، جوڈیشل آرڈر کے تحت نوازشریف کوجانے کی اجازت ملی،نوازشریف جوڈیشل آرڈر کی رو سے بھی بھگوڑے ہیں،

شہزاد اکبر کا مزید کہنا تھا کہ پی ٹی آئی کسی خاندان کی جاگیر نہیں یہ عام آدمی کی پارٹی ہے،مسلم لیگ ن اورپیپلزپارٹی فنڈنگ ذرائع بتا ہی نہیں سکتیں،سخت حالات میں نوازشریف سخت بیمار ہوتے ہیں ،نوازشریف کو واپس لانے کے لیے دوطریقہ کارپرکام ہورہا ہے،پی ٹی آئی کا آڈٹ اے گریڈ سے کرایا گیا،اپوزیشن والے ایک صاحب تو علاج کروانے باہر گئے ہوئے ہیں،احتساب طاقتور کا ہی ہوتا ہے،ریڑھی والے کا کیا احتساب کرنا ہے،جب بھی ان سے پوچھ گچھ کی جاتی ہے تو وہ سیاسی انتقام کہنا شروع کر دیتے ہیں پنجاب کے لوگ جانتے ہیں کہ ن لیگ والے کتنے دودھ کے دھلے ہوئے ہیں،نیب بہتر بتا سکتی ہے کہ کیس میں انہیں کب طلب کیا جانا ہے کب نہیں،مریم نواز کو طلب کیا گیا تھا تو یہ 400 افراد کا جتھہ لیکرگئیں،نوازشریف نے بھی سپریم کورٹ پر حملہ کیا تھا،

Leave a reply