کرونا کے مریض کیسے سکریننگ سے بچ جاتے ہیں؟ چیف جسٹس کا بڑا انکشاف

کرونا کے مریض کیسے سکریننگ سے بچ جاتے ہیں؟ چیف جسٹس کا بڑا انکشاف

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق کرونا وائرس کے حوالہ سے از خود نوٹس کیس کی سپریم کورٹ میں سماعت ہوئی،

چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں 5رکنی لارجر بنچ کیس کی سماعت کررہا ہے،اٹارنی جنرل خالد جاوید خان سپریم کورٹ میں پیش ہوئے،

دوران سماعت جسٹس قاضی امین نے استفسار کیا کہ کیا پلازما انفیوژن سے واقعی کورونا کاعلاج ممکن ہے ؟ جس پر سیکرٹری صحت نے کہا کہ پلازما انفیوژن ٹیسٹنگ کے مراحل میں ہے، ابھی تک پلازما انفیوژن کے مثبت نتائج سامنے نہیں آئے،ٹیسٹنگ ہو رہی ہے،

ایڈوکیٹ جنرل اسلام آباد نے کہا کہ چک شہزاد میں 32 کنال پر قرنطینہ سینٹر بنا رہے ہے،چیف جسٹس نے کہا کہ کھربوں روپے خرچ کئے جا اچکے اور مریض 5 ہزار ہیں، جسٹس قاضی امین نے کہا کہ نئے قرنطینہ مراکز پر پیسہ کیوں لگایا جا رہا ہے، قرنطینہ سنٹر کے لئے تعلیمی اداروں کو کیوں نہیں استعمال کیا جاتا،اٹارنی جنرل نے کہا کہ اسکولوں کی تجویز اچھی ہے ، اس پر غور کریں گے.

چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ گرمیوں میں قرنطینہ مراکز مین کیا سہولیات ہوں گی، جس پرایڈیشنل ڈپٹی اسسٹنٹ کمشنر اسلام آباد نے کہا کہ گرمیوں میں اے سی لگا دیں گے، چیف جسٹس نے کہا کہ آپ کون صاحب ہیں اپنی سیٹ پر جا کر بیٹھیں ، آپ کو پتہ ہے کہ اے سی کا کتنا خرچہ آئے گا، جسٹس قاضی امین نے کہا کہ فائبر کی چھتیں گرمیوں میں گرم ہوں گی،

قیدیوں کی رہائی کیخلاف درخواست پر سپریم کورٹ کا فیصلہ آ گیا، بڑا حکم دے دیا

ٹرمپ کی بتائی گئی دوائی سے کرونا کا پہلا مریض صحتیاب، ٹرمپ نے کیا بڑا اعلان

کرونا کیخلاف منصوبہ بندی، پاکستان میں فیصلے کون کررہا ہے

پیسہ حقداروں تک پہنچنا چاہئے، حکومت نے یہ کام نہ کیا تو توہین عدالت لگے گی، سپریم کورٹ

کرونا سے نمٹنے کیلیے ناکافی اقدامات، چیف جسٹس نے لیا پہلا از خود نوٹس

مبینہ طور پر کرپٹ لوگوں کو مشیر رکھا گیا، از خود نوٹس کیس، چیف جسٹس برہم، ظفر مرزا کی کارکردگی پر پھر اٹھایا سوال

میٹنگ میٹنگ ہو رہی ہے، کام نہیں ، ہسپتالوں کی اوپی ڈیز بند، مجھے اہلیہ کو چیک کروانے کیلئے کیا کرنا پڑا؟ چیف جسٹس برہم

ڈاکٹر ظفر مرزا کی کیا اہلیت، قابلیت ہے؟ عوام کو خدا کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ، چیف جسٹس

کرونا از خود نوٹس کیس،زکوٰۃ کی رقم کہاں خرچ ہو رہی ہے؟ چیف جسٹس برہم

چیف جسٹس گلزار احمد نے کہا کہ حکومت پیسے بہت خرچ کر رہی ہے لیکن نظر کچھ نہیں آ رہا کہ ہو کیا رہا ہے،لوگ پیناڈول وغیرہ کھا کر اسکریننگ سے بچ نکلتے ہیں،مردان میں ایک شخص نے دو پیناڈول کھائی اوروہ اسکرین سے بچ نکلا، مردان میں سعودی عرب سے آئے شخص نے کورونا پھیلایا، پیناڈول کھا کر ائیرپورٹ سے نکلا اور پوری یونین کونسل بند کرنا پڑی

قرنطینہ مراکز میں سہولیات کی عدم فراہمی، سپریم کورٹ نے سیکرٹری صحت کو بڑا حکم دے دیا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.