دنیا بھرمیں طلاق کی شرح میں نمایاں اضافہ کیوں؟ سائنسدانوں نے بڑی وجہ بتا دی

شوہر یا بیوی میں سے کوئی ایک جتنا زیادہ وقت موبائل فون پر گزارے گا، باہمی رشتہ اتنا زیادہ متاثر ہوگا
0
22
Science Technology

موجودہ عہد میں دنیا بھر میں طلاق کی شرح میں نمایاں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے اور اب سائنسدانوں نے اس کی ایک بڑی وجہ بتائی ہے۔

باغی ٹی وی: ترکیہ کی Niğde Ömer Halisdemir یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا کہ اگر شوہر یا بیوی میں سے کوئی ایک اپنے شریک حیات پر توجہ دینے کی بجائے اپنا زیادہ وقت موبائل فون میں گم ہو کر گزارتا ہے تو اس سے شادی متاثر ہوتی ہےاس تحقیق کا مقصد شادی شدہ افراد کی ازدواجی اطمینان اور فوبنگ کے رجحانات کے درمیان تعلقات پر مواصلات کی مہارت کے ثالثی کردار کی جانچ کرنا ہے۔

تحقیق میں اس عمل کے لیے Phubbing کی اصطلاح استعمال کی گئی،موجودہ عہد میں لوگ اپنے شریک حیات کی بجائے اسمارٹ فون پر زیادہ توجہ مرکوز کرتے ہیں جس سے دیگر افراد کو برا محسوس ہوتا ہے،اس تحقیق میں ترکی کے وسطی اناطولیہ کے علاقے کے کچھ شہروں سے 712 جوڑوں کو شامل کیا گیا تھاجن کی اوسط عمر 37 سال تھی تحقیق کے دوران دیکھا گیا کہ موبائل فون میں گم رہنے اور رشتے سے اطمینان کے درمیان کیا تعلق موجود ہے۔

برطانیہ : ڈاکٹرز میں خودکشیوں کی شرح حیران کن طور پر بڑھ گئی

اس مقصد کے لیے ان جوڑوں سے تفصیلات حاصل کی گئیں اور ان سے سوالنامے بھروائے گئے تاکہ ان کی ذہنی صحت کا اندازہ ہوسکے اور یہ بھی معلوم ہو سکے کہ ان کی لوگوں سے بات چیت کی صلاحیت کتنی اچھی ہے اور کس حد تک موبائل فون ان کی زندگی کا حصہ ہے۔

نتائج سے معلوم ہوا کہ شوہر یا بیوی میں سے کوئی ایک جتنا زیادہ وقت موبائل فون پر گزارے گا، باہمی رشتہ اتنا زیادہ متاثر ہوگا تحقیق کے مطابق اب Phubbing کو کافی حد تک معاشرے نے قبول کرلیا ہے مگر پھر بھی شادی شدہ افراد کے لیے یہ تباہ کن عادت ہے محققین نے بتایا کہ نظر انداز کیے جانے کا تصور لوگوں کو اچھا محسوس نہیں ہوتا اور اس کے نتیجے میں جوڑوں کے درمیان جھگڑے بڑھ جاتے ہیں، کیونکہ انہیں لگتا ہے کہ ان کا شریک حیات توقعات پر پورا نہیں اتر رہا بات کرنے کی صلاحیت Phubbing کے منفی اثرات کو زائل کرتی ہے جبکہ شادی سے اطمینان بڑھتا ہے شریک حیات کی بات اور خیالات پر پوری توجہ مرکوز کرنے سے باہمی تلخیاں کم ہوتی ہیں۔

ناسا نظامِ شمسی کے سب سے قیمتی سیارچے پر خلائی جہاز روانہ کرے گا

محققین نے تسلیم کیا کہ تحقیق کسی حد تک محدود تھی کیونکہ نتائج کے لیے جوڑوں کی جانب سے خود بیان کی گئی باتوں پر انحصار کیا گیا یہی وجہ ہے کہ وہ اس حوالے سے مزید تحقیق کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں البتہ انہوں نے مشورہ دیا کہ ایک دوسرے سے بات چیت کی صلاحیت بہتر بنانا جوڑوں کی خوشگوار زندگی کے لیے بہت زیادہ اہم ثابت ہو سکتا ہے۔

Leave a reply