fbpx

پاکستان کی جیو گرافیائی اہمیت تحریر: محمد جاوید

پاکستان جغرافیائی طور پر بہت اہم جگہ پر واقع ہے۔ دوسرے الفاظ میں ہم یہ کہ کہہ سکتے کہ پاکستان کی لوکشن کے حوالے سے قدرت بڑی مہربان ہوئی ہے تو یہ کہنا بےجا نہ ہوگا۔ آج کے کالم میں اس اہمیت پہ روشنی ڈالنے کی کوشش کرونگا یقین ہے آپکو پسند آئے گا۔
اگرہم ماضی اور حال کے حالات واقعات اور تاریخ کا مطالعہ کریں تو ہمیں یہ معلوم ہوتا کہ پاکستان جس خطے میں واقع ہے وہ ہمیشہ سے سیاسی ، معاشی اور اسٹریٹجک لوکشن کی وجہ دنیا کے لئے بہت اہمیت کا حامل رہا ہے۔ پاکستان جیس خطے میں موجود ہے وہ گذشتہ 20 سالوں سے بڑی طاقتوں کی سرگرمیوں کا مرکز رہا ہے۔ اس میں تین بڑی طاقتیں برطانیہ، سویت یونین اور امریکہ کی مداخلت دیکھنے میں آئی۔ اور جب بھی کسی بيرونی طاقت نے اس خطے پہ قدم رکھا پاکستان کا کردار نمایا رہا اس کے پیچھے وجہ پاکستان کی جیوگرافیکل لوکیشن رہی ہے ۔
سرد جنگ کے دوران اس کی اہمیت مزيد بڑھ گئی تھی اور جب سویت یونین نے افغانستان پہ قابض ہونے کی کوشش کی تب پاکستان امریکہ کا حلیف بن گیا اور پھر سرد جنگ کے بعد اس کی اہمیت خاص طور پر نائن الیون کے واقعات کے بعد دیکھنے میں آئی ہے۔
پاکستان کی جیو پولیٹیکل امپورٹنس کو سمجھنے کے لے ان باتوں کا جایزہ لینا بہت ضروری ہے

1. پاکستان سینٹرل اشیا اور جنوبی اشیا کے درمیان پل کا کردار ادا کر سکتا ہے
ایشیا اور جنوبی مغربی ایشیاء۔ ایران اور افغانستان توانائی کے وافر مقدار موجود ہیں جبکہ دوسری طرف ہندوستان، چین اور مشرقی اشیا کے ممالک میں توانائی کی بہت کمی ہے۔ اسلے ان تمام ممالک کو پاکستان راستہ فراہم کر سکتا ہے تاکہ وہ اپنی توانائی کی ضرورت کو پوری کر سکے ۔
چین نے قراقرم کے راستے بحر ہند اور بحیرہ عرب کا راستہ تلاش کیا۔
چین کے جنوبی صوبے سے اس کی اپنی بندرگاہ سنکیانگ سے 4500 کلومیٹر دور ہے لیکن گوادر 2500 کلومیٹر دور ہے۔
گوادر دنیا کا سب سے گہرا بندرگاه ہے گہرا ہونے سے یہ فایدہ ہے کہ بڑی جہاز آسانی سے بندر گاہ اسكتی ہے

2۔ ایران مشرق میں اپنی گیس اور تیل برآمد کرنے کے لئے جدوجہد کر رہا ہے
قطر پاکستان اور ترکمنستان پائپ لائن منصوبوں نے اس پوزیشن کو اجاگر کیا۔ اگر IPI کو کامیابی ملی تو پاکستان کو سالانہ 400 ملین ڈالر ملیں گے۔
3. پاکستان عظیم طاقتوں کے سنگم پر واقع ہے۔ اس کے پڑوسی ممالک میں ایک عالمی طاقت روس اور دوسری طرف ابھرتی ہوئی طاقت چین موجود ہے۔ پاکستان کا کسی بھی عالمی طاقتوں سے کوئی بھی اتحاد اس کی اہمیت کو مزید بڑھاتا ہے۔
4. سیکورٹی اور ٹریڈ خطے میں امریکہ کے دو اہم مفادات ہیں جبکہ پاکستان دہشت گردی کے خلاف جنگ میں فرنٹ لائن کردار ادا کر چکا ہے
5. وسطی ایشیا نیو گریٹ گیم کا مرکز بن چکا ہے ۔وسطی ایشیا میں وسائل کے لئے مغربی جدوجہد۔ تیل اور توانائی کے لئے ہمیشہ رہی ہے ۔
یو ایس ایس آر کے زوال کے بعد ، نئی جدوجہد شروع ہوئی جو تیل کی سیاست سے ہی ظاہر ہوتی ہے۔
پاکستان تیل سے مالا مال مشرق وسطی کے ممالک کے بہت قریب واقع ہے۔ یہ پٹی
ایران سے شروع ہوتے ہوۓ سعودی عرب تک اور پھر اس سے آگےتیل والے ممالک تک رسائی ممکن بنا دیتی ہے
6. اگر ہم مسلم ممالک کے نقشے پر نظر ڈالیں تو ، پاکستان اسلامی ممالک کے درمیان میں موجود ہے۔ مغرب کی طرف ایران اور سے آگے تمام مسلم ممالک جاکرافریقہ تک پھیلے ہوے ہیں ۔
اور مشرق کی طرف بنگلادیش اور ساؤتھ ایسٹ اشیا کے تمام مسلم ممالک موجود ہے۔
پاکستان جنوبی ایشیاء ، مغربی ایشیاء اور وسطی ایشیا کا سنگم ہے۔ پس پاکستان توانائی کے لامحدود وسائل والے ممالک اور توانائی کے محدود وسائل والے ممالک کے درمیان پل کا کردار ادا کر سکتا ہے۔
اس وقت دنیا کو 2 بڑی مسائل کا سامنا ہے ایک توانائی کا بہران اور دوسرا دہشت گردی تو ان دونوں مسائل کو حل کرنے میں پاکستان کردار ادا کر سکتا ہے۔
پاکستان کی جیوگرافیائی اہمیت نہ صرف پاکستان کے لئے بہت اہمیت کا حامل ہے بلکہ پوری دنیا کو اس کی اہمیت کا اندازہ ہے اور دنیا کی ضرورت بھی ہے۔
اب اس وجہ سے پاکستان کے سامنے ہمیشہ چلنجز کا سامنا رہا ہے اور آگے بھی چیلنجز آتے رہینگے آپ یہ پاکستان کی لیڈرشپ پہ منحصر ہے کہ کیسے اس سے فائیدہ اٹھاتی ہیں۔

@I_MJawed