fbpx

لاہور میں کیسز کی شرح 30 فیصد سے کم ہو کر 18 فیصد پرکیسےآگئی،ڈاکٹرراشد یاسمین نے انکشاف کردیا

لاہور: لاہور میں کیسز کی شرح 30 فیصد سے کم ہو کر 18 فیصد پرکیسےآگئی،ڈاکٹرراشد یاسمین نے انکشاف کردیا ،اطلاعات کے مطابق صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور میں ہفتہ اور اتوار کو کیے گئے مکمل لاک ڈاؤن کا اثر ہونے لگا ،

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ افطاری کے بعد سحری تک سب کچھ بند کرنے کا بہت بڑا فائدہ ہوا ہے جب کہ لاہور میں ہمارا لاک ڈاؤن سب سے مؤثر رہا ہے اور لاہور میں کیسز کی شرح 30 فیصد سے کم ہو کر 18 فیصد پر آگئی ہے ،

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ جتنے مریض آ رہے ہیں اتنے صحت مند ہو کر جا رہے ہیں ، آکسیجن کی طلب کا اس وقت کوئی مسئلہ نہیں ہے، کابینہ کمیٹی نے اجازت دی ہے کہ ہسپتالوں میں آکسیجن جنریٹر لگا سکتے ہیں ، اگر سختی سے ایس او پیز پر عمل کریں تو مزید بہتری آسکتی ہے ،

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ عید پر کوشش ہے کہ ایس او پیز پر سختی سے عمل ہو، عوام کی زندگی ہمارے لیے اہم ہے ، یہ کونسا وقت ہے کہ عید کی خوشیاں منائیں، عید سادگی سے منائیں اور اللہ تعالیٰ سے دعا کریں کہ وہ ہمیں اس صورتحال سے جلد از جلد نکالے۔

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ 7 نئے ویکسینیشن سینٹرز کا اضافہ کر رہے ہیں، لاہور میں تین نئے ویکسینیشن سینٹر بنا رہے ہیں، ویکسین کی 3 کروڑ ڈوزز کا آرڈر ہو چکا ہے ، وہ ساتھ ساتھ ملتی رہیں گی ،

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ ہم نے جو ویکسین منگوائی ہیں تمام مؤثر ہیں ، صوبے میں گزشتہ ہفتے اوسطاً 55000 ہزار ویکسین روزانہ کی بنیاد پر لگائی گئیں، ہمیں اس مہینے میں 20 لاکھ مزید ویکسین مل جائے گی ، موجودہ چائینیز ویکسین دنیا میں سب زیادہ سے کامیاب ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.