fbpx

بھارت ، سال کے ابتدائی چار ماہ میں کی 808 کسانوں نے خودکشی

بھارتی ریاست مہاراشٹر میں چار ماہ میں 808 کسانوں نے خود کشی کی ہے

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق مہاراشٹر میں کسانوں کی خود کشی پر بھارت سرکار پر جوں تک نہیں رینگتی کیونکہ گزشتہ برس یعنی سال 2018 میں بھی ابتدا کے چار ماہ میں 896 کسانوں نے خود کشی کی تھی. اس سال 808 کسان خود کشی کر چکے ہیں. بھارتی ریاست مہاراشٹر کے ودربھ علاقے میں سب سے زیادہ کسانوں نے خودکشی کی۔ اپریل کے آخر تک اس علاقے میں 344 کسانوں نے خود کشی کی.پانی کے بحران کی وجہ سے مراٹھواڑا میں 269 کسانوں نے خودکشی کی۔ شمالی مہراشٹر میں 161، مغربی مہاراشٹر میں 34 کسانوں نے خودکشی کی۔ بارشیں نہ ہونے کی وجہ سے بھارتی کسانون کی فصلیں تباہ ہوئیں ،ا نہیں بھاری نقصان اٹھانا پڑا لیکن مودی سرکار نے کسانون کی مدد نہ کی جس کی وجہ سے کسان خود کشیاں کر رہے ہیں. حکومت نے 2017 میں کسانوں کے قرض معافی کا اعلان کیا تھا مگر عملدرآمد نہ ہوا. کسانوں کا کہنا ہے کہ پانی کے بحران کی وجہ سے فصلیں تباہ ہوئیں تو ساتھ میں دودھ کی پیداوار بھی متاثر ہوئی کیونکہ جانورون کو دینے کے لئے چارہ نہیں ملتا .