fbpx

اسلام آباد کچہری منتقلی سے متعلق بڑا اقدام سامنے آگیا۔

وفاقی حکومت کا اسلام آباد کچہری منتقلی سے متعلق بڑا اقدام سامنے آگیا۔ 91 عدالتوں پرمشتمل جدید طرز کے جوڈیشل کمپلیکس کی فوری تعمیر کا فیصلہ کرلیا گیا ہے۔ سیکرٹری قانون نے عدالت کو آگاہ کیا کہ 31 مارچ کو سی ڈی ڈبلیو پی سے منصوبے کی منظوری ہو جائے گی۔ جس پر چیف جسٹس نے وزارت قانون کی کارکردگی کی تعریف کی اور کہا کے اسلام آباد کچہری کی منتقلی سے متعلق حکومتی اقدامات کو سراہتے ہیں۔ 91 کورٹس کی جی الیون میں تعمیر کے لیے چھ اعشاریہ آٹھ بلین روپے کی منظوری کل ہو جائے گی جس میں گراؤنڈ کے ساتھ آٹھ منزلہ عمارت تعمیر کی جائے گی۔ سیکرٹری قانون نے بتایا کہ سائلین کے لیے سہولت سنٹر کی تعمیر سے متعلق بھی پیپر ورک مکمل ہو چکا اور جمعرات کو وفاقی کابینہ سے بھی منظوری ہو جائے گی جس کی سمری ارسال کردی گئی ہے۔ چیف جسٹس نے سیکریٹری قانون کو ہدایت دی کہ وفاقی کابینہ سے منظوری کے بعد سمری کی ایک کاپی عدالت جمع کروائیں۔ سیکریٹری قانون نے بتایا کہ جی الیون جوڈیشل کمپلیکس کی تزئین و آرائش کا کام تقریباً مکمل ہو چکا ہے اور جوڈیشل کمپلیکس میں عدالتوں کو اسٹاف بھی فراہم کردیا گیا ہے۔ پہلے سے موجود جوڈیشل کمپلیکس کی بلڈنگ کی حوالگی کا معاملہ بھی طے پا چکا ہے۔ نیب کی پرانی بلڈنگ کورٹس کے کیے موضع نہیں ہیں۔ ٹربیونل کی منتقلی کے لیے جی ٹین میں کرائے پر عمارت لے لی ہے جس پر چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ کوشش کریں جلد سے جلد یہ مسئلہ حل ہوسکے اور سائلین کی سہولت کو ذہن میں رکھ کے یہ فیصلے کریں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.