جاپانی پروفیسر کی مشرقی وسطی میں مزید زلزلوں کی پیشگوئی

0
22

زلزلے سے متعلق تحقیق کرنے والے جاپان کے ایک ماہر نے مشرقی وسطی میں بڑی شدت کے مزید زلزلوں کی پیشگوئی کی ہے۔

باغی ٹی وی : غیر ملکی میڈیا کے مطابق یونیورسٹی آف تسوکوبا میں سیزمولوجی کے پروفیسر یاگی یوجی کا خیال ہے کہ مشرق وسطٰی کے کئی ممالک کو 7.8 شدت کے مزید زلزلوں کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

ترکیہ میں ایک بار پھر شدید زلزلہ، شدت 5.6 ریکارڈ

جاپانی میڈیا کے ساتھ انٹرویوز میں پروفیسریاگی یوجی نےبتایا کہ اس زلزلےکےمرکزکےقریب کئی فالٹس ہیں جہاں شمال مشرقی اناطولیائی پلیٹیں عرب پلیٹ سےمل جاتی ہیں جس کی وجہ سےان کے درمیان ایک پیچیدہ ٹیکٹونک ڈھانچہ بن جاتاہےا س سے تناؤ پیدا ہوتا ہے اور جب یہ انتہا پر پہنچتا ہے تو یہ پلیٹیں ایک دوسرے سے ٹکرا جاتی ہیں جس کی وجہ سے زمین کی تہوں میں توانائی پیدا کرنے والی بڑی تبدیلیاں آتی ہیں اور زلزلہ آ جاتا ہے۔

ترکیہ اور شام میں زلزلے سے 10ہزار سے زائد اموات کا خدشہ

یاگی یوجی نے پیش گوئی کی کہ ’مستقبل میں، اسی شدت کے زلزلے آنے کا امکان ہے انہوں نے مزید بتایا کہ جنوری 2020 میں مشرقی اناطولین فالٹ کے قریب 6.7 شدت کا زلزلہ آیا تھا اور عمارت گرنے سے بہت سے افراد ہلاک ہو گئے تھے 1939 میں مشرقی ایرزنکن میں 7.8 شدت کا زلزلہ آیا جس میں 30 ہزار سے زائد افراد جان سے گئے۔ اس کے علاوہ دیگر زلزلے بھی آئے جن میں تقریباً 17 ہزار افراد کی اموات ہوئیں۔

ترکیہ و شام زلزلہ: ماہر موسمیات نے سوشل میڈیا پر 3 دن قبل ہی خبردار کردیا تھا

واضح رہے کہ پیر کو مقامی وقت کے مطابق صبح چار بج کر 17 منٹ پر 7.8 شدت کا زلزلہ آیا جس کی گہرائی غازی انتیپ شہر کے قریب 17.9 کلو میٹر تھی ترکیہ اور شام میں آنے والے تباہ کن زلزلے سے اب تک ہلاکتوں کی تعداد 8000 سے زائد ہو گئی ہے۔

Leave a reply