جذبہ ایمانِ کی طاقت تحریر: محمد بلال

0
61

يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُوا إِن تَنصُرُوا اللَّهَ يَنصُرْكُمْ وَيُثَبِّتْ أَقْدَامَكُمْ

اے ایمان والو ! اگر تم ﷲ (کے دین) کی مدد کرو گے تو وہ تمہاری مدد کرے گا، اور تمہارے قدم جما دے گا

جب مسلمانوں کا قبلہ مغرب کے بجاۓ کعبہ ہو
نظریں دنیاوی سپر پاور کے بجاۓ گنبد خضریٰ پر ہوں اور بھروسہ صرف اللّه پر ہو تو 1965 اور 27 فروری جیسی فتح مسلمانوں کے قدم چومتی ہیں

اسلامی جمہوریہ پاکستان
اللّه کے رازوں میں سے ایک راز اسلام کا قلعہ
واحد ملک جس کی بنیاد کلمہ طیبہ لا الہ الا اللہ محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم پر رکھی گئی
اپنے قیام سے لے کر آج تک اسلام دشمنوں کی نگاہوں میں کانٹے کی مانند کھٹک رہا ہے 

اور دشمن مسلمانوں کے قلعہ کو فاتح کرنے کے خواب پچھلے 73 سالوں سے دیکھتا ہوا آرہا ہے
پوری دنیا کے یہود و نصاریٰ اور ہندو پاکستان کو ختم کرنے کے لیے ہر وقت
کوئی نا کوئی سازشیں کرتے رہتے ہیں

کبھی کلبھوشن جادھو جیسے جاسوسوں کے زریعے کالعدم تحریکوں
(تحریک طالبان پاکستان،بی ایل اے) کو فنڈنگ کرکے پاکستان میں دہشت گردی و بدامنی پھیلاتے ہیں

تو کبھی فیک نیوز ویب سائٹس سے پاکستان مخالف پروپیگنڈا کرتے ہیں

لیکن اللّه کے شیر ان سب فتنوں اور سازشوں کا بھرپور مقابلہ کر رہے ہیں

اللّه کے یہ شیر بری فوج کے روپ میں سرحدوں کی نگرانی
ایئر فورس کے روپ میں فضاوں اور
پاک بحریہ کے صورت میں سمندری حدود کی ہر وقت حفاظت کر رہے ہوتے ہیں

جس کی سب سے بڑی مثال 26 فروری کی رات ہے جب انڈیا کا اسرائیل کے ساتھ ملکر امریکہ کی آشیر باد سے رات کی تاریکی میں حملہ کرنا تھا

لیکن اللّه کے سپاہی مملکت خداداد کی حفاظت کے لیے ہر وقت جاگ رہے ہوتے ہیں

رات کی تاریکی میں اس مشترکہ حملہ کو نا صرف ناکام بنایا بلکہ دوسرے دن اللّه کے شیروں نے اپنی سر زمین پر رہتے ہوۓ دنیا کی تمام شیطانی قوتوں کو پیغام دیا کے ہم خاتم النبین کے امتی ہیں
ہم حضرت علی شیر خدا رضی اللّه تعالی عنہ کے غلام ہیں
جس طرح
حضرت علی رضی اللّه تعالی عنہ نے خیبر کا قلعہ فتح کیا تھا اسی طرح ان کے غلام اسلام کے قلعہ پاکستان کی نا صرف حفاظت کریں گے بلکہ اس کی طرف اٹھنے والی ہر میلی آنکھ کو پھوڑ دیں گے.

اس سب کے علاوہ دوسری جانب یہ ہم سب کی بطورمسلمان مجموعی ذمہ داری ہے کہ عالمِ اسلام کی ترقی اور حفاظت کیلیے لایعنی قسم کے اختلافات بھلا کر اتحاد و یگانگت کی ایسی مثال قائم کریں کہ دشمنانِ پاکستان اور اسلام ہمارے خلاف سازشوں کا سوچ بھی نہ سکیں۔ اِسلام کی اِن تعلیمات کو عام کرنا ہوگا جو موجودہ مسائل کا حل پیش کرتی ہیں۔ ہمیں چاہۓ کہ کسی بھی معاملے پراشتعال کی کے بجائے اس پر مناسب قانونی چارہ جوئی کی راہ تلاش کریں۔

قرآنِ کریم میں حقِ باری تعالی کا ارشاد ہے،
وَ  لَا  تَهِنُوْا  وَ  لَا  تَحْزَنُوْا  وَ  اَنْتُمُ  الْاَعْلَوْنَ  اِنْ  كُنْتُمْ  مُّؤْمِنِیْنَ(۱۳۹)

ترجمہ
اور تم ہمت نہ ہارو اور غم نہ کھاؤ، اگر تم ایمان والے ہو تو تم ہی غالب آؤ گے ۔
سورہ آل عمران 139

مصنف آزاد کالم نگار اور سوشل میڈیا ایکٹیو سٹ ہیں
@Bilal_1947

Leave a reply