کراچی ضمنی الیکشن، تحریک انصاف کے اپوزیشن لیڈر گرفتار

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق کراچی ps88 الیکشن کے دوران پی ٹی آئی کے سندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حلیم عادل شیخ کو گرفتار کر لیا گیا

ایم این اے صائمہ ندیم کا کہنا ہے کہ اپوزیشن لیڈر حلیم عادل شیخ کی گرفتاری کی سخت مزمت کرتے ہیں، حلیم عادل شیخ کی گاڑی پر جیالوں کی فائرنگ پی پی کی شکست کا منہ بولتا ثبوت ہے، پیپلز پارٹی اپنی شکست سے خوفزدہ ہے

سندھ اسمبلی کے حلقہ پی ایس 88 میں ضمنی انتخاب کے موقع پر ہونے والی ہنگامی آرائی اور فائرنگ کے واقعے کے بعد الیکشن کمیشن نے اپوزیشن لیڈر حلیم عادل شیخ کو حلقے سے باہر نکالنے کا حکم دیا تھا جس کے بعد ٔپولیس نے حلیم عادل شیخ کو گرفتار کیا

ڈسٹرکٹ ریٹرنگ افسر کے حکم پرحلیم عادل شیخ کو حلقے سے باہر نکالنے کیلیے پولیس نے تحویل میں لے لیا،پولیس کا کہنا ہے کہ حلیم عادل کو حلقےسے باہر نکالنے کیلئےتحویل میں لیا گیا۔

اپوزیشن لیڈرسندھ اسمبلی کوپولیس تحویل میں لینے پر پی ٹی آئی کے کارکن بپھر گئے اور شدید نعرے بازی کی۔حلقہ 88 ملیر کے ضمنی انتخاب میں اپوزیشن لیڈر ابتدا ءسے ہی ریلی کی صورت میں مسلح محافظوں کے ہمراہ پولنگ اسٹیشنز کے دوروں میں مصروف تھے، حلیم عادل نے پیپلز پارٹی پر پولیس ذریعے دھاندلی کا الزام عائد کیا۔

پیپلز پارٹی کی جانب سے الیکشن کمیشن کو درخواست دی گئی اور بتایا گیا کہ حلیم عادل پرامن پولنگ ماحول کو خراب کررہے ہیں۔وزیر تعلیم سعید غنی اور مرتضیٰ وہاب نے ویڈیو بیانات کے ذریعے بھی تحریک انصاف خصوص حلیم عادل کی جانب سے الیکشن متنازعہ بنانے کی کوشش کا الزام لگایا درسانو چنو کے علاقے میں حلیم عادل شیخ کی گاڑی پر فائرنگ کی گئی، جس کا الزام پیپلز پارٹی پر عائد کیا گیا۔

الیکشن کمیشن کی جانب سے پولیس کو حکم جاری کیا گیا حلیم عادل شیخ کو فوری حلقہ 88 سے باہر نکال دیا جائے کیونکہ وہ مسلح محافظوں کے ہمراہ ریلی کی صورت میں پولنگ اسٹیشنز کا دورہ کررہے ہیں،جس سے ووٹرز کو پرامن ماحول میں حق رائے دہی استعمال کرنے میں دشواری پیش آرہی ہے،ساتھ ہی تمام سیاسی جماعتوں کے پارلیمنٹرینز پر بھی حلقہ میں داخلے پر پابندی عائد کردی گئی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.