کیا یہ کمپنی نہیں چلے گی؟ تجزیہ: شہزاد قریشی

0
81
qureshi

وائٹ ہائوس کا نیا مکین کون ہوگا ؟بائیڈن یا ٹرمپ عالمی میڈیا کا تبصرہ جاری ہے,تاہم ٹرمپ کی امریکہ میں مقبولیت میں اضافہ ،بائیڈن کی جنگی پالیسیوں سے امریکی عوامی نفرت کا اظہار ہے،د وسری طرف بین الاقوامی برادری امریکی خارجہ پالیسی کی مستقبل کی سمت کے بارے میں بے تابی سے انتظار کررہی ہے، امریکہ کی خارجہ پالیسی سے انکار نہیں کیا جا سکتا ا س کے فیصلے اور اقدامات پوری دنیا میں گونجتے ہیں، امریکی خارجہ پالیسی کو سمجھنا دنیا کے رہنمائوں کے لئے بہت اہم ہے، بائیڈن اور ٹرمپ کی خارجہ پالیسی کیا ہو گی، عالمی دنیا پر اس کے کیا اثرات مرتب ہوں گے ،یہ زیادہ دور کی بات نہیں،تیسری دنیا کے لئے امریکہ کی پالیسی کیا ہے اور کیا ہو گی ایک عالم گواہ ہے،

پاکستان میں پردہ اسکرین پر جو سیاسی فلم دکھائی جا رہی ہے اس کا انجام کیا ہو گا اس کا اظہار گزشتہ روز قومی اسمبلی میں سابق سپیکر قومی اسمبلی راجہ پرویز اشرف نے کیا اور کہا کہ موجودہ شور شرابے کا انجام اچھا نہیں ہوگا، لگتا ہے یہ کمپنی زیاد دیر نہیں چلے گی،بلاشبہ راجہ پرویز اشرف نے درست ہی کہا عوام کی اکثریت سیاسی فلم تو دیکھ رہی ہے اور کھڑکی توڑ رش ہے لیکن اس سیاسی فلم کی ناکامی کے بہت سے اسباب بھی ہوں گے ، فلم میں سنجیدہ اداکار نہیں پوری فلم مزاحیہ نظر آرہی ہے، ساری سیاسی فلم میں ہیرو نام کا کوئی بندہ نظر نہیں آرہا، ایک ہیرو جیل میں، دوسرا ہیرو نواز شریف جاتی امراء میں ، تیسرا ہیرو بلاول بھٹو، ہر طرف جو کر راج کا منظر دکھائی دے رہا ہے، خدا نہ کرے یہ سیاسی فلم فلاپ ہو جائے ،یہ اپنے ساتھ پوری فلم انڈسٹری کو بھی تباہ کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے،

جن سیاسی جماعتوں نے شہباز شریف کو ووٹ دیا اس کی ضمانت کوئی نہیں دے سکتا آنے والے کل میں بھی ساتھ رہیں گے ؟ سردست یہ دیکھنا اہم ہے کہ سانجھے کی ہانڈی میں سیاسی ابال کس حد تک آتا ہے،یہ بات طے ہے کہ ہم عوام اپنے سیاسی لیڈروں سے محروم ہوتے جا رہے ہیں، سیاسی جماعتوں میں حسینی اور یزیدی ٹولے موجود ہیں جو اپنے اقتدار کی خاطر ہر حد کراس کر جاتے ، حد کراس کرنے والوں کو خدا بھی معاف نہیں کرتا ،نواز شریف نام کے بھی شریف اور بحیثیت انسان بھی شریف ہیں قومی اسمبلی میں موجود اپوزیشن ارکان کے لئے فرد واحد کے خلاف نعرہ بازی آپ کو کو زیب نہیں دیتی.

Leave a reply