مائے نی میں کنوں آکھاں……..تحریر:فرح خان

0
31

عدل و انصاف کے بغیر کوئی معاشرہ قائم نہیں رہ سکتا مگر بدقسمتی سے ہمارے ملک میں اب تک عدل کا حصول بہت مشکل ہے۔عام آدمی انصاف کی تلاش میں خود منوں مٹی تلے سو جاتا ہے،جس کی بڑی وجہ ہے:
لاپرواہی، اثر و رسوخ اور انصاف میں تاخیر ۔

حیدرآباد تھانہ بلدیہ کی حدود میں شوہر کے ہاتھوں بہیمانہ تشدد سے قتل ہونے والی بیوی 4 معصوم بچوں کی ماں قرت العین کے لیے شوشل میڈیا پہ آواز بلند کی جارہی ہے ۔

قرت العین کا قاتل شوہر عمر میمن بااثر ہونے کی وجہ سے پولیس پوسٹ مارٹم رپورٹ کو تبدیل کرنے کی کوششوں میں مصروف ہے۔

سوال یہ پیدا ہوتا ہے کیا مقتول خاتون کے ورثہ کی اپیل پہ مقتول قرت العین کے قاتل شوہر عمر میمن کو سخت سزا ملے گی؟کیا معصوم بچوں کو ان کی جنت اجڑنے پہ ان کو انصاف ملے گا۔یا ہمیشہ کی طرح انصاف کی دھجیاں اڑا دی جائیں گی۔پا اثر لوگ اپنے اثر و رسوخ سے بےگناہ اور آزاد دھندھناتے پھرتے رہیں گے۔

مائے نی میں کنوں آکھاں،
درد وچھوڑے دا حال نی
مائے نی میں کنوں آکھاں،

فرح خان
@MastaniFarah

Leave a reply