میٹا کا ناروے کی عدالت سے پرائیویسی جرمانہ ختم کرنے کا مطالبہ

یومیہ 1 ملین کراؤن ($94,313) جرمانہ عائد کیا گیا
0
33
AI

میٹا پلیٹ فارمز نے ناروے کی ایک عدالت سے اس جرمانے کو روکنے کے لیے کہا ہے جو ملک کے ڈیٹا ریگولیٹر نے فیس بک اور انسٹاگرام کے مالک پر صارف کی رازداری کی خلاف ورزی کرنے پر عائد کیا ہے جبکہ 14 اگست سے پر یومیہ 1 ملین کراؤن ($94,313) جرمانہ عائد کیا گیا ہےکیونکہ وہ صارف کا ڈیٹا اکٹھا کرنے اور ان پر اشتہارات کو نشانہ بنانے کے لیے استعمال کرتے ہیںجسے رویے کی تشہیر کہا جاتا ہےجو بگ ٹیک کے لیے عام ہے۔

جبکہ کمپنی اس حکم کے خلاف ایک عارضی حکم امتناعی مانگ رہی ہےجو 3 نومبر تک روزانہ جرمانہ عائد کرتا ہے علاوہ ازیں میٹا نے پہلے ہی (صارفین سے) رضامندی طلب کرنے کا عہد کر رکھا ہےکمپنی کی نمائندگی کرنے والے ایک وکیل کرسچن ریش نے منگل کو عدالت کو بتایا۔
مزید یہ بھی پڑھیں؛
مزید یہ بھی پڑھیں؛پرواز میں دوران سفر مسافرکو خون کی الٹیاں
بچوں کے حقوق کی پامالی،ملزمان کیخلاف کاروائی ہوگی،وزیراعظم
تعلقات کو مزید وسعت دینے کے خواہاں ہیں،برطانوی ہائی کمشنر

ایوان صدر میں بزرگ افراد کیلئے ظہرانے کا اہتمام
ناروے کے ڈیٹا ریگولیٹر نے 14 جولائی کو میٹا کو بتایا کہ کمپنی کو جرمانہ کرنے کا ارادہ ہے جب تک کہ میٹا نے اصلاحی کارروائی نہ کی۔ ریگولیٹر 7 اگست کو جرمانے کے ساتھ آگے بڑھا۔ اور پھر 1 اگست کومیٹا نے کہا کہ اس نے آئرلینڈ میں کمپنی کے ہیڈ کوارٹر میں اپنے لیڈ ریگولیٹر کے جنوری کے فیصلے کا حوالہ دیتے ہوئےطرز عمل کی تشہیر کی اجازت دینے سے پہلے یورپ میں صارفین سے رضامندی طلب کرنے پر اتفاق کیا ہے۔ جبکہ ریاؤسچ نے عدالت کو یہ بھی بتایا کہ ڈیٹاٹیلسی نیٹ نے ایک تیز عمل کا استعمال کیا جو غیر ضروری تھا اور اس نے کمپنی کو جواب دینےکے لیے کافی وقت نہیں دیا۔

Leave a reply