معجزات قرآن قسط 1 ؛ مادے کی اکثریت سے کالے سوراخ کا تشکیل پانا ؛ بقلم: سلطان سکندر!!!

معجزات قرآن قسط 1

پلسار ایسے نیوٹران ستارے ہیں جو. محو گردش ہیں.

بہت سے نیوٹران ستارے جتنے بھی آج تک دریافت ہوسکے ہیں سب ریڈیو پلسار (ستارے کی قسم) ہی ہیں.. وہ ریڈیو پلسار اس لئے کہلائے جاتے ہیں کیونکہ وہ اپنے اندر سے شعاعیں نکالتے ہیں. ہم بآسانی ریڈیو ٹیلی سکوپ کو ایک سپیکر سے کنیکٹ کر کہ پلسار کی آواز سن سکتے ہیں. پلسار ستارے کی آواز ایسی ہوتی ہے جیسے کوئی مسلسل کھٹکھٹا رہا ہو….
قرآن اسے اس طرح بیان کرتا ہے ” وہ جو دستک دیتا ہے”
Quran 86:1-3

"وَالسَّمَآءِ وَالطَّارِقِ (1)
آسمان کی قسم ہے اور دستک دینے والے کی۔

وَمَآ اَدْرَاكَ مَا الطَّارِقُ (2)
اور آپ کو کیا معلوم کہ دستک دینے والی چیز کیا ہے۔

اَلنَّجْمُ الثَّاقِبُ (3)
وہ سوراخ کرنے والا ستارہ ہے۔


عربی لفظ "ثقب” کا مطلب ہے ایک سوراخ، اور”ثاقب” کا مطلب ہے سوراخ کرنے والا،
قرآن دستک دینے والے ستارے کے متعلق بیان کر رہا ہے جو سوراخ کرتا ہے،

پلسارز ایسے نیوٹرانز ستارے ہیں جو گردش کرتے ہیں۔ جیسے جیسے مادہ نیوٹران سٹار میں گرتا جاتا ہے ویسے ویسے ہی اسکا ماس بڑھتا جاتا ہے اور یہ ماس اسکی گریویٹی کو بھی بڑھاتا جاتا ہے۔ لیکن درحقیقت گریویٹی خلاء کی گولائی میں ہے۔ ایک نیوٹران سٹار اس خلاء(گولائی) کو مسخ کر دیتا ہے۔ جیسے جیسے مادہ نیوٹران(اس گولائی) میں گرتا جاتا ہے ستارے کی شکل بگڑتی جاتی ہے۔
پھر ایک وقت ایسا آتا ہے کہ بگاڑ کافی حد تک گہرا ہو جاتا ہے جو اس خلاء میں ایک سوراخ بنا دیتا ہے۔

اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ 1400 سال پہلے آنے والا ایک امی شخص(محمد صلی اللہ علیہ وسلم) کیسے جان سکتا ہے کہ پلسارز(نیوڑران ستارے) اس خلاء میں سوراخ کرتے ہیں؟؟؟؟
یہ رب العالمین کے ہونے کی ایک بڑی دلیل ہے۔

ہمارا سورج ایک بہت چھوٹا ستارہ ہے۔ اصل میں ہمارا شمسی نظام(جن میں وہ ایٹمز بھی شامل ہیں جو ہم نے بنائے) ایک ٹوٹا ہوا ستارے سے بنا ہے جو کہ 100 گناہ ہمارے سورج سے بڑا ہے۔
کچھ ستارے ہمارے اتنے بڑے سورج سے بھی کہی زیادہ بڑے ہیں، لہذا آپ تصور کر سکتے ہیں کہ ستارے کتنے بڑے ہیں۔
تاہم بائبل کے مطابق یہ ستارے اتنے چھوٹے ہیں کہ یہ زمین پر گر جائیں گے(30-24 :13)
یسوع مسیح نے کہا کہ ستارے ہماری دوسری نسل کے آنے سے پہلے زمین پر گر جائیں گے۔
جیسا کہ اس نسل کو گزرے کافی عرصہ ہوچکا ہے اور نہ ہی کوئی ستارہ زمین پر گرا ہے اور نہ گرے گا، آپ جانتے ہیں کیوں؟؟
کیونکہ زمین کسی ستارے سے ٹکرانے سے پہلے ہی ختم ہوجائے گی۔

بقلم سلطان سکندر!!!

محمد ارسلان

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.