نگران وزیراعظم،جلیل عباس جیلانی سب سے مضبوط امیدوار

وزیرِ اعظم کسی کا بھی نام دے سکتے ہیں،میں کچھ نہیں کہہ سکتا،
0
38
jalil abbas

جلیل عباسی جیلانی نگران وزیراعظم کے لیے مضبوط امیدوار

نگراں وزیراعظم کے امیدوار جلیل عباس جیلانی وزیراعظم ہاوس پہنچ گئے ہیں جلیل عباس جیلانی کا تعلق ملتان سے ہے۔ 2013 سے 2017 تک امریکہ میں پاکستان کے ایمبیسیڈر کے طور پر کام کرتے رہے ہیں۔ قانون میں بی اے اوردفاعی امورمیں ماسٹر کی ڈگری رکھنے والے جلیل عباس جیلانی امریکا اوربھارت میں سفیر کی ذمےداری نبھا چکے ہیں وہ پیشہ ور سفارت کار ہیں بطورسیکریٹری خارجہ تعیناتی سے پہلے بیلجیئم، لکسمبرگ اوریورپی یونین میں پاکستان کے سفیر رہے اور سفارتی ذمے داریوں کے دوران برسلز میں نیٹو ہیڈکوارٹرکے ساتھ بھی مسلسل رابطےمیں رہے،وہ جدہ اور لندن میں بھی تعینات رہے جبکہ کینبرا میں ہائی کمشنر کے عہدے پر بھی فائزرہ چکے ہیں

میڈیا رپورٹس کے مطابق پیپلزپارٹی نے سابق سیکرٹری خارجہ جلیل عباس جیلانی اور سابق چیف جسٹس تصدق حسین جیلانی کا نام بھی دیا ہے، تاہم آج اپوزیشن لیڈر اور وزیراعظم کے مابین ملاقات اور مشاورت نہ ہو سکی، آج ملاقات ہونی تھی جو ملتوی کر دی گئی ہے،راجہ ریاض کا کہنا تھا کہ اہم مصروفیت ہے اس وجہ سے آج نہیں مل سکتا کیئر ٹیکر وزیراعظم کا نام وزیراعظم سے ملاقات کر کے پتا چلے گا، وزیرِ اعظم کسی کا بھی نام دے سکتے ہیں،میں کچھ نہیں کہہ سکتا،

راجہ ریاض سے کل ملوں گا ،وزیراعظم
وزیراعظم شہباز شریف نے کابینہ اور قومی اسمبلی کے آخری اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نگران وزیراعظم کے لیے اپوزیشن لیڈر راجہ ریاض سے کل ملوں گا آئین کی رو سے ہمارے پاس مشاورت کے لیے 3 دن ہیں

آج حکومت کا ممکنہ آخری دن ہے وزارت پارلیمانی امور نے قومی اسمبلی تحلیل کرنے کی سمری وزیراعظم کو بھجوا دی ہے سمری پر وزیراعظم تاریخ لکھیں گے اور صدر کو بھیج دیں گے ، صدر 48 گھنٹوں میں قومی اسمبلی تحلیل کی سمری پر دستخط کرنے کے پابند ہیں،

 نگران سیٹ اپ کی تشکیل پراتحادی جماعتوں کا اجلاس

عمران خان کی مشکلات میں کمی نہ ہو سکی، ایک اور جے آئی ٹی نے 21 جولائی کو طلب کر لیا۔
عراق؛ سویڈن سفارتخانہ نذرآتش، قرآن کی بے حرمتی پر سفیر کو نکلنے کا حکم
عالمگیر ترین کی موت بارے فرانزک رپورٹ جاری

Leave a reply