fbpx

غیراخلاقی اصطلاحات اورمنفی رویوں پراعتراضات : کونسل آف کمپلینٹس پیمرا کا جواب

لاہور:سوشل میڈیا پرغیراخلاقی اصطلاحات اورمنفی رویوں کونسل آف کمپلینٹس کی درخواست پرپیمرا کا جواب ،اطلاعات کے مطابق بیرسٹر محمد احمد پنسوتا کی سربراہی میں پیمرا کی کونسل آف کمپلینٹس نے ان سوالات کے جوابات بڑے احسن انداز سے دے دیئے ہیں جن کے بارے میں کافی شبہات اوراشکالات تھے

بیرسٹر محمد احمد پنسوٹا کی سربراہی میں کونسل آف کمپلینٹس، پیمرا (پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی) نے ہدایت کی ہے کہ "غیر اخلاقی” کی تعریف کرنے کی ضرورت نہیں ہے کیونکہ پاکستان کے آئین 1973 کے تحت اس کی مناسب تعریف کی گئی ہے۔

باغی ٹی وی کے مطابق یہ کونسل آف کمپلینٹس پیمرا آرڈیننس 2002 کے تحت پاکستان بھر میں نجی الیکٹرانک میڈیا پر نشر ہونے والے مواد کو ریگولیٹ کرنے کے لیے قائم کیا گیا تھا،اس کم نے مبینہ طور پر ایڈووکیٹ ہائی کورٹ جناب فیض اللہ خان نیازی اور ایڈووکیٹ ہائی کورٹ جناب ندیم سرور کی جانب سے دائر درخواست پر فیصلہ سنایا۔

یہ فیصلہ اصل میں غیر اخلاقی مواد نشر کرنے کے لیے مشہورانٹرٹینمنٹ چینل HUM TV پرنشرہونے والا زیربحث مواد ایک ٹیلی ویژن ڈرامہ تھا جس میں انتہائی غیر اخلاقی مواد کے گرد یہ ڈرامہ نشر کیا گیا تھا

ذرائع کے مطابق کونسل آف کمپلینٹس (COC) نے اپنی 113ویں میٹنگ میں ایڈوکیٹ مسٹر نیازی اور ایڈووکیٹ مسٹر سرور کی طرف سے دائر کی گئی شکایت پر غور کیا۔ چیئرمین پیمرا محمد سلیم بیگ کی زیر صدارت اجلاس ہوا جس میں سی او سی کی جانب سے سفارشات پیش کی گئیں۔

سفارشات کے مطابق، چیئرمین کونسل آف کمپلینٹس بیرسٹر محمد پنسوٹا نے ہدایت کی کہ "بے حیائی، فحش یا غیر اخلاقی” کی تعریف کرنے کی ضرورت نہیں ہے کیونکہ ہی آئین، قانون اور ضابطہ کے تحت ان کی تعریف اور حدود متعین کی جاچکی ہیں‌۔ COC نے مزید طے کیا کہ زیر بحث مواد نہ تو غیر مہذب تھا اور نہ ہی فحش۔

 

پیمرا، لاہور نے موقف اختیار کیا کہ غیر اخلاقی، فحش یا غیر اخلاقی الفاظ کی تعریف فراہم کرنے کی ضرورت نہیں ہے جیسا کہ آئین، قانون اور قانون کے تحت پہلے ہی فراہم کیا جا چکا ہے۔ کوڈ اور مناسب فورم اس بات کا تعین کرنے کے لیے کہ آیا مواد غیر اخلاقی، فحش، بے ہودہ یا غیر اخلاقی ہے،

کونسل آف کمپلینٹس کی طرف سے کہا گیا ہے کہ مواد/حقائق اور ارد گرد کے حالات کو دیکھنے کے بعد یہ فیصلہ کیا گیا کہ تعریفوں پر فیصلہ کرنے سے کچھ انتہائی خوفناک لیکن اہم سماجی مسائل کے متعلق آگہی میم کے نفاذ میں رکاوٹ پیدا ہوگی جو سماجی بیداری پیدا کرتے ہیں – جیسے بچوں کے ساتھ بدسلوکی، عصمت دری، غیرت کے نام پر قتل، انسانی سمگلنگ کی اصطلاحات ہیں‌

 

یاد رہے کہ 23 ستمبر 2021 کو منعقدہ COC اجلاس میں محترمہ سحر زرین بندیال، محترمہ سارہ احمد، محترمہ شمیم ​​زیدی، جناب توقیر ناصر اور جناب شاہجہاں خان نے شرکت کی۔ شکایات کے مطابق HUM TV کے ذریعے نشر کیے گئے مواد میں "دو رضاعی بہن بھائیوں کے درمیان تعلقات کی شکل میں دکھائے جانے والے بے حیائی کا حساس/متنازع موضوع” شامل تھا۔ اس وقت، مواد کو بنیادی طور پر بے حیائی کی بنیاد پر چیلنج کیا گیا تھا۔