fbpx

بچ جاو:بچالو:احتیاط اپنالو:اومیکرون نہیں چھوڑے گا: بوسٹر شاٹ بھی نہیں بچا پائےگا:ڈاکٹروں کی وارننگ

بیجنگ :بچ جاو:بچالو:احتیاط اپنالو:ورنہ اومیکرون کسی کو نہیں چھوڑے گا:بوسٹر شاٹ بھی نہیں بچا پائے گا’:ڈاکٹروں کی وارننگ ،اطلاعات کے مطابق دنیا بھر میں کورونا وائرس کے مریضوں کی بڑھتی ہوئی رفتار کے ساتھ اس کی نئی قسم اومیکرون کے کیسز میں بھی تیزی سے اضافہ ہورہا ہے۔

ایک طرف جہاں اومیکرون سے بچاو کے لیے حکومتیں بوسٹر شاٹس لگانے پر زور دے رہی ہیں تو وہیں ایک اعلیٰ طبی ماہ نے دنیا کے لیے خطرے کی انتباہی گھنٹی بجا دی ہے۔

انڈین کونسل فار میڈیکل ریسرچ کے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ایپیڈیمولاجی میں سائنٹیفک ایڈوائزری کمیٹی کے چیئرمین ڈاکٹر جے پرکاش مولائل کا کہنا ہے کہ اومیکرون ویریئنٹ کو روکا نہیں جا سکتا، تقریباً ہر کوئی اس سے لازمی متاثر ہوگا۔

ڈاکٹر جے پرکاش نے دعویٰ کیا کہ کورونا ویکسین کی بوسٹر خوراک یا احتیاطی خوراک بھی اس پر کام نہیں کرے گی۔ان کا کہنا ہے کہ اومیکرون خود کو زکام کے طور پر پیش کر رہا ہے۔مولائل نے اومیکرون انفیکشن کے بارے میں کئی چونکا دینے والے دعوے کیے ہیں۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ اب کووڈ 19 کوئی خوفناک بیماری نہیں ہے کیونکہ کورونا کا نیا ویریئنٹ بہت ہلکا ہے۔ اس سے اسپتال میں داخل ہونے کے نوبت بھی کم آرہی ہے۔

وہ کہتے ہیں کہ اومیکرون ایک ایسی بیماری ہے جس سے ہم نمٹ سکتے ہیں۔ ہم میں سے 80 فیصد لوگوں کو یہ بھی معلوم نہیں ہوگا کہ ہم اس سے متاثر ہوئے ہیں۔انہوں نے دعویٰ کیا ہے کہ انفیکشن کے ذریعے قدرتی طور پر حاصل کی گئی قوت مدافعت زندگی بھر رہ سکتی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ویکسین آنے سے پہلے ہی بھارت کی 85 فیصد آبادی کورونا سے متاثر ہو چکی تھی۔ ایسی صورتحال میں کورونا ویکسین کی پہلی خوراک نے بوسٹر ڈوز کا کام کیا۔

ڈاکٹر جے پرکاش نے کہا کہ دنیا بھر میں یہ خیال کیا جاتا ہے قدرتی طور پر ہونے والا انفیکشن مستقل طور پر امیونٹی نہیں دیتا، لیکن میں مانتا ہوں کہ یہ غلط ہے۔

ڈاکٹر جے پرکاش مولائل نے کہا کہ صرف دو دنوں میں کورونا وائرس کا پھیلاو دوگنا ہو رہا ہے۔ ایسی صورت حال میں جب تک کورونا ٹیسٹ سے اس کے بارے میں پتہ چلے گا، متاثرہ شخص پہلے ہی بہت سے لوگوں کو متاثر کر چکا ہوگا۔

لاک ڈاؤن کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ ہم زیادہ دیر تک گھر میں بند نہیں رہ سکتے۔ یہ سمجھنے کی ضرورت ہے کہ ڈیلٹا ویرئنٹ کے مقابلے اومیکرون کافی ہلکا ہے۔