پاکستانی ایئر لائنز پر یورپ میں پابندی ختم ہو گی یا نہیں فیصلہ اگلے برس

0
111
pia tyer

پاکستانی ائیرلائنز پر یورپ میں پابندی ختم ہوگی یا نہیں فیصلہ اگلے سال مئی میں ہوگا،یورپی یونین ایوی ایشن سیفٹی ایجنسی (ایاسا )کی ٹیم پاکستان میں فزیکل آڈٹ کرکے واپس چلی گئی،سابق پی ڈی ایم حکومت نے وقت پر سول ایوی ایشن کو دوحصوں میں تقسیم کرنے کے حوالے سے قانون سازی میں تاخیر کی جس کی وجہ سے مزید 6ماہ پابندی برقرار رہنے کے بعد مئی2024 میں فیصلہ کیا جائے گا ۔پی ڈی ایم حکومت وقت پر قانون سازی کرلیتی تو آج پابندی ختم ہوجاتی ۔

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق مطابق یورپی یونین برطانیہ اور امریکہ میں پاکستانی ائرلائنز پر لگنے والی پابندی کو ختم ہونے میں ابھی مزید 6ماہ لگیں گے ایاسا کی آڈٹ ٹیم پاکستان میں آڈٹ کرکے چلی گئی ہے سابق پی ڈی ایم حکومت نے جاتے ہوئے اگست2023 میں سول ایوی ایشن کو دو حصوں میں تقسیم کرنے کے حوالے سے قانون سازی کی جس کے بعد ایاسا نے پاکستان میں آکر فزیکل آڈٹ کرنے پر رضامندی ظاہر کی، اس سے قبل ایاسا نے پاکستانی حکام کو صاف بتادیا تھا کہ جب تک سول ایوی ایشن اتھارٹی کو دو حصوں میں تقسیم نہیں کیا جائے گا ایاسا آڈٹ نہیں کرے گی کیوں کہ اس سے قبل ملک میں سیاسی عدم استحکام کی وجہ سے تحریک انصاف حکومت کے دور میں قومی اسمبلی میں پیش ہونے والا بل لیپس ہوگیا تھا جس پر ایاسا حکام نے پاکستانی حکام کو بتایا کہ آپ سول ایوی ایشن اتھارٹی کو دو حصوں میں تقسیم نہیں کرنا چاہتے ہیں ،یورپ میں پابندی ہٹانے کے لیے یہ آرڈیننس جاری کیا سول ایوی ایشن حکام نے پی ڈی ایم حکومت بننے کے فورا بعد اس وقت کے وزیر ایوی ایشن سعد رفیق کو بتایا کہ یورپ اور امریکہ میں پابندی ایک ہی صورت میں ختم ہوسکتی جب اس کے لیے قانون سازی کی جائے پی ڈی ایم حکومت نے اپنے دور اقتدار کے آخری ہفتے میں یہ بل پاس کیا جس کے بعد حکام نے ایاسا حکام سے ملاقات کی اور ان کو اس شرط کے پورا ہونے کے بارے میں آگاہ کیا جس پر نومبر میں ایاسا کی ٹیم نے پاکستان میں آکر فزیکل آڈٹ کرنے پر رضامندی ظاہر کی ۔

دستاویزات کے مطابق ایاسا نے پاکستان میں سول ایوی ایشن کے ساتھ پی آئی اے،فلائی جناح اور ائیر بلیو کا بھی آڈٹ کیا اگرپی ڈی ایم حکومت وقت پر قانون سازی کرلیتی تو یورپی یونین ائیر سیفٹی کمیٹی کا 2023میں ہونے والے اجلاس میں پاکستانی ائیرلائن پر پابندی کے حوالے سے فیصلہ ہوجاتا اب پاکستان کو مئی 2024میں یورپی یونین ائیر سیفٹی کمیٹی کے اجلاس میں ایاسا ٹیم اپنے فزیکل آڈٹ سے آگاہ کرے گی جس میں پاکستان پر پابندی ہٹائی جائے یا نہ ہٹائی جائے کا فیصلہ کیا جائے گا ۔ذرائع نے بتایا کہ ایاسا ٹیم کے پاکستان میں آڈٹ کے دوران ان وقت پاکستانی حکام کو انتہائی شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا جب فیڈرل بورڈ ریونیو (ایف بی آر)نے پاکستان انٹرنیشل ائیر لائن(پی آئی اے) کے تمام بینک اکاؤنٹس بند کردیئے جس پر ایاسا حکام نے پاکستانی حکام سے پوچھاکہ یہ ائیر لائن کس طرح آپریشن کرئے گی جبکہ ملک کے اندر اس کے بینک اکاؤنٹ بند کردیئے گئے ہیں۔(محمداویس)

پشاور فلائنگ کلب کے جہاز کی فروخت،مبشر لقمان کا مؤقف بھی آ گیا

پی آئی اے کا ایک اور فضائی میزبان کینیڈا میں لاپتہ

پی آئی اے،بوئنگ 777 طیارے کے انجن میں آگ،حادثے سے بچ گیا

پی آئی اے اور گو لوٹ لو کی جانب سے قرعہ اندازی، گاڑیاں اور سمارٹ فون کے انعامات

پی آئی اے ایک بار پھر مشکل کا شکار،اکاونٹس منجمد

پرواز سے قبل پی آئی اے عملے کیلئے شراب نوشی کا ٹیسٹ لازمی قرار

 پی آئی اے کے دو مزید فضائی میزبان ٹورنٹو میں پراسرار طور پر لاپتہ 

 سول ایوی ایشن اتھارٹی (سی اے اے) مدد کیلئے سامنے آگئی

Leave a reply