پشاور کے عوام یو ٹیلٹی سٹورز میں بھی بنیادی اشیاء سے محروم

0
23

کے پی کے کے مختلف اضلاع میں یوٹیلیٹی سٹورز تو بنا دیئے گئے ہیں لیکن عوام کو کوئی ریلیف نہیں مل رہا۔ یہاں پر وہ اشیاء تو موجود ہے جس پر سبسڈی نہیں لیکن وہ چیزیں غائب ہے جس پر حکومت نے سبسڈی دی ہے جس طرح آٹا، چینی اور گھی وغیرہ۔ مقامی میڈیا کے مطابق پشاور شہر کے درجنوں یوٹیلیٹی سٹورز ایسے ہیں جہاں پر چینی، آٹا اور دیگر سبسڈیزئڈ اشیاء کی قلت ہے۔ شہری سٹورز کا رخ کرتے ہیں اور مایوسی کی حالت میں واپس لوٹ جاتے ہیں۔ صوبائی دارالحکومت پشاور میں 90 سے زائد یوٹیلیٹی اسٹور بنائے گئے۔ یہ اسٹورز پوش علاقے حیات آباد میں واقع ہونے کے ساتھ شہر کے دور دراز علاقوں میں بھی واقع ہے تاکہ مہنگائی کے اس دور میں عوام کو کوئی ریلیف مل سکے لیکن شہریوں کے مطابق اس سٹورز سے عوام کو کوئی ریلیف نہیں مل رہا رہے.
شہریوں کے مطابق جن اشیاء پر سبسڈی دی گئی ہے وہ شہر کے کسی بھی سٹور پر مل نہیں رہی جبکہ باقی چیزوں کی قیمت مارکیٹ کے برابر ہیں اس لئے سٹور کا کوئی فائدہ عوام کو نہیں مل رہا ہے.
یوٹیلیٹی اسٹور پر گزشتہ 3 ماہ سے چینی اور آٹا نہیں مل رہا ہے وہ ہر دوسرے روز مختلف اسٹورز کا رخ کرتے ہے لیکن مایوس ہوکر واپس لوٹتے ہے۔ اسٹور میں ملنے والی فی کلو چینی میں 71 روپے تک بچت ہے کیونکہ مارکیٹ میں چینی 160 روپے فی کلو مل رہی ہے جبکہ اسٹور میں 91 روپے فی کلو ملتی تھی یعنی ایک کلو میں 71 روپے تک کا بچت کافی بڑا بچت ہے اور اسی لئے ہر کسی کے کوشش ہوتی ہے کہ مہنگائی کے اس دور میں انہیں سستی اشیاء مل جائے اور کچن کا خرچ توڑا کم ہو جائے۔ 10 کلو گرام آٹے کے تھیلے کی قیمت اسٹور پر 648 روپے مقرر کی گئی ہے یعنی 20 کلو گرام آٹے کا تھیلہ 12 سو 96 روپے میں ملتا ہے اور یہی آٹا آپ باہر مارکیٹ میں خریدے گئے تو 28 سو سے کم نہیں ملے گا. 20 کلو گرام آٹے کے تھیلے میں 15 سو روپے تک کا بچت ہو رہا ہے لیکن ملتا ہی نہیں یہاں۔
شہریوں کے مطابق جن اشیاء پر سبسڈی دی گئی ہے وہ مل نہیں رہی،جس پر سبسڈی نہیں وہ تمام چیزیں مل رہی ہے لیکن ان چیزوں کا ریٹ مارکیٹ ریٹ کے برابر ہے کیونکہ لوبیہ فی کلو سٹور میں 428 روپے میں مل رہا ہے اور یہی لوبیہ مارکیٹ میں بھی 420 اور 430 روپے کا ملتا ہے نارمل معیار کا لوبیہ اسٹور کا بھی ہے اور مارکیٹ میں بھی یہی باآسانی مل جاتا ہے.

Leave a reply