راولپنڈی پولیس کی پھرتیاں،عام شہریوں کو گرفتار کر لیا

تھانہ پیرودائی پولیس کی جانب سے وڈیو جرنلسٹ محمد نوید کی غیر قانونی گرفتاری کا معاملہ ،تھانہ پیر ودائی پولیس کی جانب سے تحریک لبیک کے کارکنان کی بجائے عام شہریوں کی بھی گرفتاری کا انکاشاف،پولیس کا تھانہ کلچر نا بدل سکا، بے گناہ گرفتاریوں سے عوام شدید اضطراب کا شکار ہیں

تفصیلات کے مطابق عام شہریوں کی پکڑ دھکڑ کر کے افسران کو سب اچھا کی رپورٹ کی گئی ،اعلی افسران کی جانب سےمختلف تھانوں کو تعداد پوری کرنے کا ٹاسک دیا گیا تھا،تھانہ پیرودہائی پولیس نے تحریک لبیک کارکنان کے نام پر 9 افراد کو گرفتار کیا
9 افراد میں صرف دو اشخاص کا تعلق تحریک لبیک سے تھا ،5 افراد کو فجر کی نماز کے وقت مسجد جاتے گرفتار کیا تھا

2 افراد کو شادی کی تقریب سے واپسی سے گرفتار کیا جبکہ ان کا تعلق راولپنڈی سے نہی تھا ،پکڑے جانے والے 7 اشخاص کو نے پولیس کو دہائیاں دی اور اپنی بے گناہی کا بھی بتایا ،گرفتار کیئے جانے والےبے گناہ افراد بزرگ شہری بھی شامل ہیں،راولپنڈی کے دیگر تھانوں سے 10 مزید افراد بھی لائے گئے

مجموعی طور پر 19 افراد میں سے صرف 10 کا تعلق تحریک لبیک سے تھا،پولیس نے اپنی مجبوری کا اظہار کرتے ہوئے بے گناہ افراد کو جیل بھیج دیا
بے گناہ افراد کے لواحقین کا وزیر اعظم عمران خان،چیف جسٹس، وزیر اعلی پنجاب، وزیر داخلہ اور آئی جی سے معاملے کا نوٹس لینے کا مطالبہ
بے گناہ افراد کو گرفتار کرنے والے اعلی افسران، ایس ایچ اوز اور اہلکاروں کے خلاف کاروائی کی جائے
اگر کاروائی نا کی گئی گئی تو عدالتی کاروائی اور احتجاج پر مجبور ہونگے

وڈیو جرنلسٹ کا بھائی اس کی گھر رہائش پزیر نہی تھا ،وڈیو جرنلسٹ کے تیسرے بھائی کے گھر بھی پولیس نے چھاپہ مار کاروائی کی تھی ،دوران کاروائی پولیس کے ساتھ خواتین اہلکار موجود نہیں تھیں،پولیس نے چھاپہ مار کاروائی کے دوران خواتین سے شدید بدتمیزی اور نتائج کی دھمکیاں بھی دی تھی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.