صادق سنجرانی کا کمال،سینیٹ میں خلاف ضاطہ بھرتیوں کی بھرمار،اکثریت اراکین کی رشتے دار

0
147
chairman senate

سابق چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی سینیٹ میں ملازمین کی پوری فوج بھرتی کرکے چلے گئے،دستاویزات کے مطابق سینیٹ سیکرٹریٹ میں بھرتیوں کی بھرمار، 6 برس میں مستقل اور کنٹریکٹ پر 480 بھرتیاں کی گئی ہیں

سینیٹ میں بھرتیاں 2018 تا 2024 سابق چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کے دور میں ہوئیں، اسی مدت میں مختلف عہدوں پر دیگر محکموں سے 26 ملازمین ڈیپوٹیشن پر بھی بلائے گئے، صحافی کی طرف سے معلومات تک رسائی کے قانون کے تحت سینیٹ سیکرٹریٹ سے ڈیٹا حاصل کیا گیا تو اس میں یہ انکشاف سامنے آیاسینیٹ سیکرٹریٹ بڑے پیمانے پر بھرتیوں کی وجوہات اور خالی آسامیوں سے متعلق جواب نہ دے سکا،سینیٹ سیکرٹریٹ نےبھرتیوں کے عمل میں شفافیت سے متعلق سوالات کا جواب دینے سے بھی انکار کیا .

سینیٹ سیکرٹریٹ میں 6 برس میں گریڈ 17 تا 20 کے 21 افسران تعینات کیے گئے، سرکاری دستاویزات کے مطابق 90 نائب قاصد، 77 جونیئر اسسٹنٹ، 49 اسٹینو ٹائپسٹ، 33 ڈرائیور بھرتی کیے گئے، 7 سیکشن افسران، 9 اسسٹنٹ ڈائریکٹر، 35 اسسٹنٹ پرائیویٹ سیکرٹری بھرتی کیے گئے۔سینیٹ میں جن افراد کو بھرتی کیا گیا وہ مبینہ طور پر صادق سنجرانی، ممبران پارلیمنٹ کے رشتہ دار ہیں۔سینیٹ سیکریٹریٹ نے 60 فیصد سے زائد بھرتیاں خلاف ضابطہ کی ہیں۔

واضح رہے کہ قومی اسمبلی میں بھی ایسا ہی ایک سیکنڈل سامنے آیا تھا جس کا نیب نے نوٹس لے رکھا ہے،،نیب نے 2018 سے مارچ 2024 تک بھرتیوں کی تفصیلات طلب کرلیں،نیب کی جانب سے جاری نوٹس میں کہا گیا ہے کہ اسد قیصراورراجہ پرویز اشرف ادوار میں بھرتیوں کی تفصیلات دی جائیں،نیب کے مراسلے میں بھرتیوں کے طریقہ کار،وزارت خزانہ سے منظوری متعلق استفسار کیا گیا ہے

واضح رہے کہ باغی ٹی وی نے خبر شائع کی تھی کہ قومی اسمبلی سیکرٹریٹ میں غیر قانونی بھرتیاں کی گئی ہیں،سابق سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر اور راجہ پرویز اشرف نے انت مچا دی، غیر متعلقہ اور اضافی افراد کو بھرتی کیا گیا ہے جو حکومت پاکستان کے خزانے کو قوی نقصان پہنچا رہے ہیں، اسد قیصر نے ملازمین کو بھرتی کیا تو وہیں راجہ پرویز اشرف بھی ان سے پیچھے نہ رہے ، قومی خزانے کا بے دردی سے اس طرح استعمال کیا جا رہا ہے کہ سیکرٹری قومی اسمبلی کا ڈرائیور بحریہ ٹاؤن فیز ایٹ سے سرکاری گاڑی پر دودھ لینے جاتا ہے، اسمبلی ہاؤس میں ملازمین کی بھر مار، میرٹ سے ہٹ کر بھرتیاں کی گئیں،راجہ پرویز اشرف نے اسد قیصر کے غیر قانونی کاموں کو اس لئے تحفظ دیا کیونکہ وہ خود اس بہتی گنگا میں ہاتھ دھونا چاہتے تھے

قومی اسمبلی سیکرٹریٹ میں‌غیر قانونی بھرتیوں بارے چیئرمین نیب کو بھی درخواست دی گئی تھی جس پر چیئرمین نیب نے نوٹس لیا اور تفصیلات طلب کر لی ہیں،

سماعت سے محروم بچوں کے والدین گھبرائیں مت،آپ کا بچہ یقینا سنے گا

سوشل میڈیا پر فوج مخالف پروپیگنڈہ کےخلاف سینیٹ میں قراردادمنظور

سوشل میڈیا پر نفرت انگیز مواد کی تشہیر،یورپی ممالک سے 40 پاکستانی ڈی پورٹ

حاجرہ خان کی کتاب کا صفحہ سوشل میڈیا پر وائرل،انتہائی شرمناک الزام

Leave a reply