fbpx

سندھ اسمبلی میں 18سال میں لازمی شادی، قانون ایجنڈے میں شامل

صوبہ سندھ میں 18 سال کی عمر کے نوجوانوں کی لازمی شادی کرانے کا ایکٹ سندھ اسمبلی کے آج کے ایجنڈے میں شامل ہے.

لازمی شادی ایکٹ کا نجی بل جماعتِ اسلامی کے رکنِ اسمبلی سید عبدالرشید نے جمع کرایا تھا۔

سید عبدالرشید کے جمع کرائےگئے ایکٹ میں کہا گیا ہے کہ 18 سال کے بچوں کی شادی نہ کرانے پر والدین پر جرمانہ عائد کیا جائے۔

بل میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ 18 سال کے بچوں کی شادی نہ کرنے پر والدین کو تحریری ٹھوس جواز دینا ہو گا۔

پاکستان پیپلز پارٹی نے لازمی شادی ایکٹ کے زیرِ غور قانون کی مخالفت کی تھی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.