fbpx

حکومت نے بجلی کی قیمیت میں فی یونٹ 7 روپے91 پیسے مزید اضافہ کردیا

اسلام آباد:حکومت نے بجلی کی قیمیت میں فی یونٹ 7 روپے91 پیسے مزید اضافہ کردیا،اطلاعات کے مطابق وفاقی حکومت نے عوام پرمزید بوجھ ڈالتے ہوئے بجلی کی قیمیت میں مزید اضافہ کردیا ہے، یہ بھی معلوم ہواہے کہ اس سلسلے میں حکومت نے عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) کے سامنے سرنڈر کرتے ہوئے ایک اور شرط پوری کردی، بحلی کا بنیادی ٹیرف 7 روپے 91 پیسے فی یونٹ بڑھانے کی مرحلہ وار منظوری دے دی۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم شہباز شریف نے وزارت توانائی کی سمری پر منظوری دی، وفاقی کابینہ میں بجلی کے بنیادی ٹیرف میں اضافے کی سمری ٹیک اپ نہیں ہو سکی تھی، بجلی کا بنیادی ٹیرف مرحلہ وار بڑھایا جائے گا۔

اس حوالے سے ذرائع کا بتانا تھا کہ پہلا اضافہ 3 روپے 50 پیسےکا ہے، یکم جولائی سے بجلی 3 روپے 50 پیسے فی یونٹ مہنگی کرنے کی منظوری دی گئی، اگست سے بجلی مزید 3 روپے 50 پیسے فی یونٹ مہنگی ہو گی، اکتوب

صدر ایف پی سی سی آئی عرفان اقبال شیخ نے کہا ہے کہ کراچی کے کاروباری ادارے 10 سے 15 گھنٹے کی بجلی بندش کا شکار ہیں جس کی مذمت کرتے ہیں۔

کراچی کے کاروباری ادارے 10 سے 15 گھنٹے بجلی کی بندش کا شکار ہیں جس کی صدر ایف پی سی سی آئی عرفان اقبال شیخ نے شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ بجلی کی بدترین لوڈشیڈنگ سے نہ صرف مقامی اقتصادی اور تجارتی سرگرمیاں تباہ ہورہی ہیں بلکہ برآمدات کرنے والی صنعتوں کیلیے بھی بحران کی کیفیت پیدا ہوگئی ہے کیونکہ مختلف صنعتیں اور شعبے آپس میں جڑے ہوئے ہیں۔

صدر ایف پی سی سی آئی عرفان اقبال شیخ نے مزید کہا کہ کراچی میں کاروباری، صنعتی اور تاجر برادری کو گزشتہ 4 سے 6 ہفتوں کے دوران غیر معمولی لوڈ شیڈنگ سے اربوں روپے کا مالی نقصان ہوچکا ہے اور سینکڑوں کاروباری مالکان نے ایف پی سی سی آئی سے اپنے ناقابل برداشت نقصانات اورممکنہ دیوالیہ ہونے کے خدشات کا اظہار کیا ہے۔ر سے بجلی کا بنیادی ٹیرف 91 پیسے فی یونٹ بڑھایا جائے گا، نیپرا نے بجلی کا بنیادی ٹیرف بڑھانے کا فیصلہ وفاقی حکومت کو بھجوایا تھا۔