متحدہ عرب امارات میں ہونے والی بارش کلاؤڈ سیڈنگ کا نتیجہ تھی؟

گزشتہ 2 دن ہم نے اس حوالے سے 6 ٹرپس مکمل کیے ہیں, ماہرین
0
144
UAE

دبئی، جو اپنی خشک آب و ہوا اور تیز درجہ حرارت کے لیے جانا جاتا ہے، منگل کے روز موسلا دھار بارش سے متاثر ہوا، جس سے صحرائی ملک میں بڑے پیمانے پر سیلاب آ گیا،6 گھنٹوں سے زائد بارش کے دوران نہ صرف انٹرنیشیل ائیرپورٹ سمیت سڑکیں، مالز دیگر پبلک مقامات برساتی پانی سے متاثر ہوئےبلکہ اس علاقے میں موسمیاتی تبدیلیوں کے بڑھتے ہوئے اثر و رسوخ کے بارے میں خدشات کو جنم دیا حکام نے کم از کم ایک ہلاکت اور گھر اور کاروبار کو نمایاں نقصان کی بھی اطلاع دی-

باغی ٹی وی : منگل کے روز متحدہ عرب امارات میں آنے والے شدید گرج چمک کے بعد، دبئی کو نمایاں سیلاب کا سامنا کرنا پڑا، صحرائی شہر ریاست میں صرف چند گھنٹوں میں ڈیڑھ سال سے زیادہ کی بارش ہوئی منگل کی صبح 9 بجے کے قریب شدت اختیار کرنے والے طوفان نے دبئی انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر بڑی شاہراہوں اور آپریشنز میں خلل ڈالا، جو بین الاقوامی سفر کے لیے دنیا کے مصروف ترین ہوائی اڈوں میں سے ایک ہے، ہوائی اڈے کے آس پاس کی سڑکیں ڈوب گئی تھیں، اور لگژری کاروں میں سوار امیر ڈرائیور سیلاب زدہ گلیوں میں ‘تیرتے’ دکھائی دے رہے تھے۔

غیر ملکی میڈیا نے رپورٹ کیا ہے کہ متحدہ عرب امارات میں ہونے والی بارش مصنوعی بارش برسانے کی کوششوں کا نتیجہ تھی متحدہ عرب امارات کی حکومت کی جانب بارشوں کے حوالے سے سائنس کا استعمال کیا گیا ہے، اس مصنوعی بارش کے پرا جیکٹ کے حوالے سے متحدہ عرب امارات محکمہ موسمیات کے ادارے نیشنل سینٹر آف میٹیورولاجی کی جانب سے ناسا اور نیشنل سینٹر آف ایٹموسفیرک ریسرچ کے تعاون سے اس پراجیکٹ پر کام کیا گیا ہے۔

متحدہ عرب امارات میں بارش کا 75 سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا

اس حوالے سے نیشنل سینٹر آف میٹیورولاجی کے ماہرین کی جانب سے عرب میڈیا سے بات چیت میں کہنا تھا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں میں کلاؤڈ سیڈنگ آپریشن کا استعمال کیا گیا ہے، ماہرین نے بتایا کہ جب بھی آسمان پر بادل ہوتے ہیں، ہم یہ کلاؤڈ سیڈنگ کا آپریشن انجام دیتے ہیں، گزشتہ 2 دن ہم نے اس حوالے سے 6 ٹرپس مکمل کیے ہیں،جبکہ ماہرین کی جانب سے کلاؤڈ سیڈنگ کے دوران متحدہ عر ب امارات کے درجہ حرارت میں کمی کا بھی بغور جائزہ لیا گیا، جس کے مطابق اس آپریشن کے بعد 10 ڈگری تک درجہ حرارت گر گیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ کئی سال سے متحدہ عرب امارات کی جانب سے خشک ماحول سے لڑنے کے لیے، ذراعت کو بڑھانے کے لیے اور پانی کے مسائل کو حل کرنے کے لیے کلاؤڈ سیڈنگ کا استعمال کیا جا رہا ہے اس آپریشن میں ہوائی جہاز کے ذریعے بادلوں میں نمک کے فلیئرز اور دیگر ضروری مادے چھوڑے جاتے ہیں تاہم اس سب میں اہم بات یہ ہے کہ اس آپریشن میں کامیاب ہونے کے لیے آسمان میں بارش والے بادلوں کا ہونا ضروری ہے، جس کے تحت نمک کے فلیئرز اپنا کام کر پاتے ہیں۔

نو مسلم جنوبی کورین پاپ سنگر، داؤد کم کا کوریا مسجد بنانے کا اعلان

ذرائع کے مطابق سائنسدانوں کی جانب سے پانی کی طرف متوجہ ہونے والے سالٹ فلئیرز کو سالٹ کے نینو پارٹیکلز کے ساتھ چھوڑا جاتا ہے، جس کے بعد بادلوں میں بارش کی مقدار میں اضافہ ممکن ہو جاتا ہےکلاؤڈ سیڈنگ سے رین فال ریٹ میں سالانہ 10 سے 30 فیصد تک اضافہ ہو جاتا ہےدوسری جانب برطانوی یونی ورسٹی کے میٹیورولاجسٹ ایڈورڈ گراہم کا کہنا ہے کہ کلاؤڈ سیڈنگ میں استعمال ہونے والا نمک ماحول کو نقصان نہیں پہنچاتا ہے، جبکہ متحدہ عرب امارات کے بعد سعودی عرب، ایران نے بھی اس مںصوبے میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔

متحدہ عرب امارات کی جانب سے یہ پروگرام 90 کی دہائی میں شروع کیا گیا تھا، جبکہ اس حوالے سے ناسا اور نیشنل سینٹر آف ایٹموسفیرک ریسرچ کی خدمات حاصل کی گئیں، متحدہ عرب امارات نے کچھ ماہ قبل پاکستان کوبھی مصنوعی بارش برسانے میں مدد دی تھی۔

"این سی ایم نے موسم کی نگرانی کے لیے 86 خودکار موسمی اسٹیشنوں (AWOS) کا ایک قومی نیٹ ورک قائم کیا ہے، چھ موسمی ریڈار جو پورے متحدہ عرب امارات کا احاطہ کرتے ہیں، اور ایک اپر ایئر اسٹیشن مرکز نے موسمیاتی ڈیٹا بیس بھی بنائے ہیں اور اعلیٰ درستگی کے اعداد و شمار کی ترقی میں مدد کی ہے۔ UAE میں موسم کی پیشین گوئیاں اور نقلی سافٹ ویئر،” UAEREP کے عمل کی تفصیل پڑھتی ہے، اس وقت، این سی ایم العین ہوائی اڈے سے چار بیچ کرافٹ کنگ ایئر C90 طیارے چلاتا ہے جو جدید ترین ٹیکنالوجیز اور آلات سے لیس ہیں جو کلاؤڈ سیڈنگ اور ماحولیاتی تحقیق کے لیے استعمال کیے گئے ہیں۔”

سعودی معاون وزیر دفاع اسلام آباد پہنچ گئے،آرمی چیف سے ملاقات شیڈول

Leave a reply