fbpx

برطانیہ کو 30 سالہ تاریخ میں سب سے بڑی ریلوے ہڑتال کا سامنا

لندن میں ریلوے کی 30 سالہ تاریخ کی سب سے بڑی ہڑتالیں کل سے شروع ہوں گی-

باغی ٹی وی : "دی گارجئین” کے مطابق کل سے آئندہ چھ دن تک لاکھوں افراد کو ٹرین سے سفر میں مشکلات ہوں گی، ہڑتالیں منگل، جمعرات اور ہفتے کو ہوں گی ہڑتالوں میں 13 ٹرین آپریٹرز کے 40 ہزار سے زائد ورکرز حصہ لیں گے-

برطانوی شخص جس نے 20 سال بعد پہلی بار پانی پیا

صنعتی کارروائی سے بچنے کی کوشش کرنے کے لیے مزدور یونین اور ریلوے حکام کےدرمیان ہڑتال ختم کرانےکیلئے مذاکرات جاری ہیں ، منگل کو انڈر گراؤنڈ ٹرین سروس کی بھی ہڑتال ہوگی جس کی وجہ سے سڑکوں پر شدید ٹریفک جام ہوسکتا ہے-

رپورٹس کے مطابق ٹرانسپورٹ فار لندن نے مسافروں کو پیدل یا سائیکل پرسفر کرنے کا مشورہ دیا ہے، آر ایم ٹی یونین نے ملازمین کی برطرفیوں کے خلاف ہڑتال کا فیصلہ کیا ہے، آر ایم ٹی یونین نے تنخواہوں میں اضافے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ہڑتال کے دوران 20 ہزار سے زائد سروسز کی بجائے صرف ساڑھے 4 ہزار سروسز فراہم کی جائیں کی ہڑتال کے اعلان کے بعد نیٹ ورک ریل نے 20 سے 26 جون تک نیا ٹائم ٹیبل جاری کردیا، ہڑتال والے دن ٹرین صبح ساڑھے7 سے شام ساڑھے 6 بجے تک چلیں گی۔

ریلوے ورکرز کا کہنا ہے کہ مہنگائی چار دہائیوں کی بلند ترین سطح پر پہنچنے کے بعد گزارا مشکل ہوگیا ہے، تنخواہوں میں مہنگائی کی شرح سے اضافہ نہ ہونے پر ہڑتال کا فیصلہ کیا ہے-

غرب ہمارے بارے میں کیا سوچتا ہے:ہمیں کوئی پرواہ نہیں: روس

سگنلرز کے واک آؤٹ کا سب سے زیادہ اثر پڑے گا، خاص طور پر دیہی علاقوں میں، جس کی وجہ سے ویلز جیسی جگہوں پر لائن بند ہو جائے گی، جہاں ٹرین آپریٹر کے ساتھ کوئی براہ راست تنازعہ نہیں ہے۔ زیادہ تر آپریٹرز نے مسافروں سے کہا ہے کہ ہڑتال کے دنوں میں اگر ضروری ہو تو ہی سفر کریں۔ ناردرن ریل نے مسافروں کو پورے ہفتہ سفر نہ کرنے کا مشورہ دیا ہے۔

جب کہ قدامت پسندوں نے یونین کی حمایت یافتہ لیبر پارٹی کو ہڑتالوں کے ساتھ جوڑنے کی کوشش کی ہے، لیبر نے نشاندہی کی ہے کہ ٹرانسپورٹ سیکرٹری، گرانٹ شیپس، اور دیگر وزراء نے مذاکرات میں حصہ لینے سے انکار کر دیا ہے۔

امریکا میں فائرنگ کے واقعات میں مسلسل اضافہ،میوزک شو میں گولیاں چل گئیں

یونینوں نے وزیروں سے ملنے کو کہا، یہ کہتے ہوئے کہ محکمہ خزانہ اور ٹرانسپورٹ کنٹرول کنٹریکٹس اور فنڈنگ۔ شیپس نے کہا کہ بات چیت کرنا آجروں پر منحصر ہے،صنعت کے اندرونی ذرائع اور یونینوں کے مطابق ٹرین آپریٹنگ کمپنیوں کو بتایا گیا ہے کہ وہ تنخواہوں میں اضافے کی پیشکش نہیں کر سکتیں،

شیڈو ٹرانسپورٹ سکریٹری لوئیس ہائی نے پیر کو بی بی سی ٹوڈے کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے کہا کہ یہ ضروری تھا کہ حکومت اس میں قدم رکھے وہ نہ صرف مذاکرات کا بائیکاٹ کر رہے ہیں بلکہ درحقیقت ان میں رکاوٹ ڈال رہے ہیں۔”

تاہم، ٹریژری کے چیف سکریٹری سائمن کلارک نے بی بی سی کو بتایا: "اگر آپ چاہیں تو جھوٹی امید دینے کا کوئی فائدہ نہیں کہ ان حملوں سے بچا جا سکتا ہے۔ اس مرحلے پر امکان ہے کہ وہ آگے بڑھیں گے۔

امریکا کے قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیون کورونا کا شکار ہو گئے